صدر بائیڈن کا ماحولیات کے بارے میں سربراہ کانفرنس منعقد کرنے کا اعلان

صدر بائیڈن کا ماحولیات کے بارے میں سربراہ کانفرنس منعقد کرنے کا اعلان

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی جوبائیڈن نے دنیا بھر کے 40ممالک کو ماحول کے بارے میں عالمی سربراہ کانفرنس میں شرکت کی دعوت دی ہے۔ امریکہ کی میزبانی میں یہ ورچوئل کانفرنس 22اور 23 اپریل کو ہوگی۔ لائیو نشر ہونے والا یہ اجلاس دنیا بھر میں براہ راست دیکھا جاسکے گا۔ صدر بائیڈن نے وائٹ ہاؤس میں اپنا عہدہ سنبھالنے کے بعد پہلے ہی روز ماحولیات کے بارے میں پریس معاہدے میں دوبارہ شرکت کرلی تھی۔ جس میں سے سابق صدر ٹرمپ نکل گئے تھے۔ اس کے چند روز بعد 27 جنوری کو صدر بائیڈن نے اعلان کیا تھا کہ وہ جلد اس سلسلے میں سربراہ کانفرنس بلائیں گے جس کے ذریعے بڑی معاشی قوتوں کی ان کوششوں میں مزید بہتری لائی جائے گی جو وہ ماحولیاتی بحران سے نمٹنے کیلئے کر رہی ہیں۔ وائٹ ہاؤس کے بیان کے مطابق اس سربراہی کانفرنس کے ذریعے ماحول کے بارے میں مضبوط تر کارروائی کرنے کی فوری ضرورت اور اس کے اقتصادی فوائد پر زور دیا جائے گا۔ وائٹ ہاؤس کی اطلاع کے مطابق صدربائیڈن نے برطانوی وزیراعظم بورس جانسن سے ٹیلی فون پر ماحولیاتی مقاصد کے حصول کی اہمیت پر تبادلہ خیال کیا۔ اس کے علاوہ انہوں نے چین اور ایران کے بارے میں پالیسی میں اشتراک کے ساتھ چلنے پر بھی اتفاق کیا۔ فون کے بعد میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے صدر بائیڈن نے بتایا کہ انہوں نے برطانوی وزیراعظم کو آگاہ کیا کہ جمہوری ممالک کو بھی ایک ایسا اقتصادی انفراسٹرکچر منصوبہ لے کر آنا چاہئے چو چین کے ”بیلٹ اینڈ روڈ“ انفراسٹرکچر کا متبادل ہو۔ چین اس منصوبے پر کھربوں ڈالر کی سرمایہ کاری کر رہا ہے جس کے باعث ایشیائی اور مغربی ممالک میں کشیدگی کا ماحول پیدا ہوگیا ہے۔ صدربائیڈن نے تجویز کیا کہ مغربی ممالک کو بھی وسیع پیمانے پر ایسے منصوبے کیلئے فنڈ فراہم کرنا چاہئے جس سے ایشیا کی کم ترقی یافتہ اقوام کو فائدہ پہنچ سکے۔ چین نے حالیہ برسوں میں قرضوں اور مختلف منصوبوں کے ذریعے ایشیائی ممالک میں سڑکوں، ریلوے، ڈیم اور بندرگاہیں تعمیر کرنے میں جو مدد فراہم کی ہے اس سے اس کے اثرورسوخ میں بہت اضافہ ہوا ہے۔

 سربراہ کانفرنس

مزید :

صفحہ اول -