آٹے کی قیمتیں برقرار، حکومت کا 100ارب روپے تک سبسڈی دینے کا فیصلہ 

آٹے کی قیمتیں برقرار، حکومت کا 100ارب روپے تک سبسڈی دینے کا فیصلہ 

  

  کبیروالا(تحصیل رپورٹر)وفاقی وزیر برائے غذائی تحفظ و تحقیق سید فخر امام نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان پاکستان کو کرپشن فری اور دنیا کی مثالی قوم بنانے کے لیے سخت محنت کر رہے ہیں، 2018ء میں اقتدار میں آنے کے بعد وزیراعظم نے ملکی معیشت کو مستحکم کرنے، برآمدات میں اضافہ اور ملک سے کرپشن کے خاتمے کے لیے خصوصی اقدامات اٹھائے، موجودہ حکومت ملک میں قانون کی حکمرانی، پارلیمنٹ کی بالادستی اور قومی اداروں میں شفافیت لانے کے لیے جدوجہد کر رہی ہے،ان خیالات کا اظہار نہوں نے معروف زرعی سائنس دان راؤ عمران مانی کے ساتھ ملاقات کرنے موقع پر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ زراعت کو جدید خطوط پر استوار کرکے حقیقی ثمرات حاصل کئے جا سکتے ہیں،ہمیں اپنے زرعی طریقوں کو جدید بنانے کی ضرورت ہے،کاشت کاری میں میں جدت پیداکرکے زرعی پیداوار کو زوال سے بچایا اور کسان کے منافع میں اضافہ کو یقینی بنایا جا سکتا ہے، ملکی معیشت میں ریڑھ کی ہڈی کا مقام رکھنے والی ”زراعت“ پر خصوصی توجہ دیئے بغیر معاشی نمو کے اہداف حاصل نہیں کرسکتے۔انہوں نے مزید کہا  ہے کہ رواں برس گندم کی پیداوار 2 کروڑ 62 لاکھ ٹن متوقع ہے جبکہ گزشتہ برس کی پیداوار 2 کروڑ 52 لاکھ ٹن تھی، فصلوں کے تخمینے سے یہ ظاہر ہوتا ہے کہ پنجاب میں ایک کروڑ 90 لاکھ 80 ہزار ٹن، سندھ میں 40 لاکھ ٹن، خیبر پختونخوا اور بلوچستان کی مشترکہ پیداوار 92 لاکھ ٹن کا اضافہ ہوگا۔انہوں نے بتایا کہ حکومت نے آئندہ ایک سال میں 30 لاکھ ٹن گندم درآمد کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور 3لاکھ ٹن گندم کا ذخیرہ بھی کررکھا ہے تاکہ اس بات کو یقینی بنایا جاسکے کہ اجناس کی کوئی قلت نہ ہو، درآمد کے تخمینے کو حتمی شکل دے دی ہے اور مربوط طریقے سے صورتحال کو سنبھال رہے ہیں تاکہ صارفین کو کسی بھی وقت گندم کی قلت کا سامنا نہ کرنا پڑے۔وفاقی وزیر برائے غذائی تحفظ و تحقیق سید فخر امام نے مزید کہا کہ حکومت نے گندم کی کم از کم امدادی1800روپے فی من مقررکی ہے،عوام کو ریلیف کی فراہمی کے لیے آٹے کی قیمت میں کوئی تبدیلی نہ کرنے اور 100 ارب تک سبسڈی دینے کا فیصلہ کیا ہے،عام آدمی کو ریلیف کیلئے آٹے پر جتنی سبسڈی دینی پڑی دیں گے۔

گندم

مزید :

ملتان صفحہ آخر -