ملک کو بحرانوں سے نکالنے کیلئے بڑی سیاسی جدوجہد ضروری، لیاقت بلوچ

ملک کو بحرانوں سے نکالنے کیلئے بڑی سیاسی جدوجہد ضروری، لیاقت بلوچ

  

ملتان (سٹی رپو رٹر)نائب امیر جماعت اسلامی، سابق پارلیمانی لیڈر لیاقت بلوچ نے رحیم یار خان، ملتان، صادق آباد، گھوٹکی،پنوں عاقل، سکھر میں سیاسی انتخابی کمیٹیوں اور ورکرز کنونشن میں خطاب کیا اور لاہور میں سیاسی رہنماؤں کے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سپریم کورٹ نے پنجاب میں بلدیاتی اداروں کو بحال کر کے پی ٹی آئی حکومت کے غیر آئینی(بقیہ نمبر23صفحہ6پر)

 اقدام پر مہر تصدیق ثبت کر دی کہ عمران خان کی ایما پر پنجاب حکومت نے بلدیاتی اداروں کا قتل کیا۔ حقیقت تو یہ ہے کہ وزیراعظم اور وزیراعلیٰ کو اپنی غلطی تسلیم کر کے اقتدار سے الگ ہو جانا چاہیے۔ سیاسی انتخابی ظلم یہ بھی کہ ادارے ختم کر کے نیا نظام اور بااختیار بلدیاتی نظام اور انتخابات بھی نہیں کرا سکے۔ جماعت اسلامی انتخابی اصلاحات اور بلدیاتی انتخابات میں بھرپور جدوجہد کرے گی۔ بلدیاتی انتخابات میں نوجوان قیادت کو مقابلہ کے میدان میں اتارا جائے گا۔لیاقت بلوچ نے کہا کہ جماعت اسلامی کی سیاسی، انتخابی حکمت عملی واضح اور دو ٹوک ہے کہ اتحادی سیاست کا حصہ بننا کارلاحاصل ہے۔ اپنی بنیاد، اپنے منشور اور انتخابی نشان ترازو کے ساتھ انتخابی سیاسی محاذ پر جدوجہد کریں گے۔ پارلیمنٹ اور اسمبلیوں کے اندر کی سیاست اب عوامی محاذ سے اپنا تعلق اور اعتماد کھو چکی ہے، سیاسی جوڑ توڑ، بے اصولیوں اور ضمیروں کی خریدوفروخت نے سیاسی جمہوری انتخابی نظام کا کچومر نکال دیا ہے۔ ملک کو بحرانوں سے نکالنے کے لیے اصولوں، نظریات اور اہلیت و امانت دیانت سے بڑی سیاسی جدوجہد ناگزیر ہو چکی ہے۔ سندھ میں پی پی پی اور جنوبی پنجاب میں پی ٹی آئی مکمل طور پر ناکام اور نااہل حکومتیں ہیں۔ مہنگائی، بے روزگاری کے ساتھ تباہ حال سڑکیں، گلیاں، گندے پانی کی فراوانی، تعلیم و صحت اور انسانوں کے تحفظ کی سہولتیں ختم ہیں۔لیاقت بلوچ نے کہا کہ جماعت اسلامی آزاد اور ذمہ دار صحافت کی علمبردار ہے۔ حکومت اور ریاستی اداروں نے آزادی صحافت اور صحافیوں کے آزادانہ، پیشہ ورانہ حق کو پاما ل کر دیا ہے۔ صحافی تنظیموں کے اجتماع کی حمایت کرتے ہیں اور صحافیوں کی ہر طرح کی اخلاقی، سماجی اور سیاسی مدد کریں گے۔

لیاقت بلوچ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -