کورونا وائرس،شہر بھرمیں زیادہ تر کاروباری مراکز بند رہے

کورونا وائرس،شہر بھرمیں زیادہ تر کاروباری مراکز بند رہے

  

پشاور(سٹی رپورٹر)صوبائی دارلحکومت میں کورونا کے تیسرے لہر کے پیش نظر ہفتہ میں دو دن کاروباری مراکز بند کرنے کے فیصلہ کی روشنی میں ہفتہ کے روز شہر بھرمیں زیادہ تر کاروباری مراکز بند رہے جبکہ سڑکوں پر ٹریفک بھی نہ ہونے کے برابر تھا تاہم شہر بھر میں کورونا ایس او پیز پر عمل درامد کرنے میں شہریوں کی جانب سے غیر سنجیدگی کا مظاہرہ بدستور کیا جا رہا ہے جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ میں بھی ایس او پیز کی دھجیاں بکھیر کی رکھ دی گئی  شہر میں زیادہ ہفتہ میں دو روز ہفتہ اوراتوار کے روز کاروباری مراکز بند کرنے کے بعد شہر میں کاروباری مراکز بند رہے جسکی وجہ سے شہر میں سناٹا رہا جبکہ ٹریفک بھی معمول سے کم رہا اور بی ار ٹی بس سروس پر بھی مسافر وں کا رش نہیں تھا تاہم شہریوں کی جانب سے کورونا ایس او پہیز پر کوئی عمل درامد کرتا نظر نہیں ایا جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ میں بھی کورونا سے بچاو کے حفاظتی تدابیر پر کوئی عمل درامد دیکھنے کو نہیں ملا وہی صوبائی حکومت اور ضلعی انتظامیہ بھی کورونا ایس او پیز پر عمل درامد کروانے میں بے بس دکھائی دینے لگے اور اس حوالے سے تا حال کوئی موثر حکمت عملی ترتیب نہ  دے سکے ۔واضح رہے کہ پشاور کی تاجر برادری نے پندرہ دنوں کیلئے ہفہ مین دو دن بازار بند رکھنے اور دوسرے دنوں میں اٹھ بجے تک دکانیں کھلی رکھنے کی حکومتی فیصلہ سے اتفاق کیا ہے تاہم واضح کیا ہے اسکے بعد اجلاس بلا کر ائندہ کا لائحہ عمل پیش کیا جائے گا جسمیں کاروبار کے اوقات اور ہفتہ میں دو دن چھٹی کے فیصلہ کا جائزہ لیا جائے گا۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -