خیبر،لنڈی کوتل میں کورونا وائرس میں تشویشناک حد تک اضافہ

خیبر،لنڈی کوتل میں کورونا وائرس میں تشویشناک حد تک اضافہ

  

خیبر (بیوروپورٹ) لنڈیکوتل میں کورونا وائرس میں خطرناک حد تک اضافہ ہو گیا ہے تیسری لہر شروع ہونے کے بعد 35 افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے ہسپتال میں آئیسولیشن وارڈ اور این جی او کی طرف سے دئیے گئے کمرے بھی غیر فعال ہیں تمام پازیٹیو افراد کو ہسپتال میں آئسولیٹ کرنے بجائے گھر بھیج دیا جاتاہے عوام کورونا کی تیسری لہر سے بے خبر ایس اوپی پر کسی قسم کا عمل درآمد نہیں ہو رہا بازاروں میں دس فیصد عوام بھی ماسک تک استعمال نہیں کرتے اگر سلسلہ جاری رہا تو حالات مزید خراب ہو سکتے ہیں ہسپتال ذرائع کے مطابق کہ تیسری لہر شروع ہونے کے بعد 35 افراد میں وائرس کی تصدیق ہو گئی ہیں جبکہ پازیٹیو کیسزز میں روزانہ اضافہ ہوتا جارہا ہے ہسپتال میں دو آئیسولیشن وارڈز ایک ایمرجنسی اور ایک وراڈ نئے بلڈنگ میں تیار کیا گیا ہے جبکہ تقریباً بارہ بہترین کورونا آئیسولیشن کمرے ایک این جی او نے دئیے ہیں اور اسکے کے لئے سٹاف بھی تعینات کیا گیا ہے لیکن اسکے باوجود بھی کورونا پازیٹیو مریض کو آئسولیٹ کرنے کے بجائے گھر بھیج دیا جاتا ہے جبکہ دوسری طرف لنڈیکوتل کے عوام بھی تیسری لہر سے بلکل بے خبر ہے بازاروں اور دوسری جہگوں پر ماسک لگانے والے بہت کم لوگ دیکھنے میں آتے ہیں ڈاکٹروں کے مطابق کہ اگر لوگوں نے احتیاطی تدابیر اختیار نہیں کی تو حالات مزید خراب ہو سکتے ہیں اس لئے عوام احتیاطی تدابیر اختیار کر یں اور ماسک کا استعمال لازمی 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -