ایشیائی ترقیاتی بینک کا پاکستان سے بچت، سرمایہ کاری بڑھانے کا مطالبہ

ایشیائی ترقیاتی بینک کا پاکستان سے بچت، سرمایہ کاری بڑھانے کا مطالبہ

  

       اسلام آباد (این این آئی)ایشیائی ترقیاتی بینک نے کہا ہے کہ مستحکم قرض کے آؤٹ لک کے باوجود پاکستان کی معیشت بدستور کمزور ہے کیونکہ گزشتہ مالی سال میں سرمایہ کاری کی شرح جی ڈی پی کے 15.2 فیصد پر بہت کم رہی ہے۔میڈیا رپورٹ کے مطابق پاکستان میں غیر ترقی یافتہ کیپٹل مارکیٹوں نے بچتوں کو غیر موثر متحرک کرنے میں اہم کردار ادا کیا ہے، جس کے نتیجے میں بچت اور سرمایہ کاری میں بڑا فرق پیدا ہوا ہے۔ملک کی کیپٹل مارکیٹوں کے غیر موثر کردار کی وجہ سے بینکوں کی اپنی کریڈٹ پیدا کرنے کی صلاحیت متاثر ہوئی اور معیشت غیر مستحکم غیر ملکی سرمائے پر منحصر رہی۔ڈومیسٹک کیپٹل مارکیٹس کی ترقی سے مقامی اوپن مارکیٹ آپریشنز کے ذریعے قرض جاری کر کے مقامی کرنسی فنانسنگ تک حکومت کی رسائی میں اضافہ ہو سکتا ہے اور اس طرح زرمبادلہ کے خطرے اور افراط زر کو بہتر طریقے سے منظم کرنے میں مدد مل سکتی ہے۔پاکستان کی کیپٹل مارکیٹوں کو مزید ترقی دینے، نجی سرمایہ کاری کو فروغ دینے اور پائیدار نمو کے لیے ملکی وسائل کو متحرک کرنے میں مدد کے لیے 22 مارچ کو 30 کروڑ ڈالر کے قرض کی منظوری سے منسلک ایشیائی ترقیاتی بینک کی انٹرنل رپورٹ کہتی ہے کہ پاکستان کیپٹل مارکیٹ سے متعلق اہم اشاریوں میں ہم مرتبہ ممالک سے نمایاں طور پر نیچے ہے۔مالی سال 2021 میں جی ڈی پی کے 15.2 فیصد پر پاکستان کی سرمایہ کاری کی شرح جی ڈی پی کے جنوبی ایشیائی اوسط کے 31 فیصد کا تقریباً نصف ہے۔

ایشیائی ترقیاتی بینک

مزید :

صفحہ اول -