ایران سے عنقریب جوہری معاہدہ طے پا جائیگا، امریکہ 

  ایران سے عنقریب جوہری معاہدہ طے پا جائیگا، امریکہ 

  

واشنگٹن (اظہر زمان، بیورو چیف) امریکی وزیر خارجہ انیٹونی بلنکن نے امید ظاہر کی ہے کہ عنقریب ایران کیساتھ جوہری معاہدے پر ہونیوالے مذاکرات کی کامیاب تکمیل کے بعداس پر دستخط ہو جائیں گے۔ انہوں نے یہ تبصرہ ایران کیساتھ جوہری معاہدہ طے کرنے سے پہلے مشرق وسطیٰ کے دورے کے پہلے مرحلے پر اسرائیل پہنچنے کے بعد کیا۔  26 ما ر چ سے شروع ہونیوالے وہ اس پانچ روزہ دورے میں فلسطین، مراکش اور الجزائر بھی جائیں گے۔ مراکش کی وزٹ کے دوران و یو ای اے کے وزیر خارجہ سے بھی ملیں گے۔ امر یکی وزیر خارجہ نے مشرق وسطی میں اپنے اتحادیوں کو یقین دلایا کہ معاہدے کے تحت ایران اپنے جوہری مواد کو توانائی کے فروغ سمیت مفید مقاصد کیلئے استعمال کرسکے گا۔ اسے جوہری طاقت نہیں بننے دیا جائیگا۔ یاد رہے اسرائیل اور متعدد عرب ممالک امریکہ کے ایران کیساتھ جوہری معاہدے کے سخت مخالف ہیں جن کے تحفظات دور کرنے کیلئے امریکی وزیر خارجہ خطے کا دورہ کر رہے ہیں۔ قبل ازیں واشنگٹن میں محکمہ خارجہ نے بتایا تھا وزیر خارجہ اس دورے میں اپنے اتحادیوں کو ایران کیساتھ ممکنہ معاہد ے کے بارے میں اعتماد میں لیں گے اور اس کے علاوہ یوکرین پر روسی جارحیت پر بھی تبادلہ خیال کریں گے۔ بائیڈن انتظامیہ 2015ء میں ایران کیساتھ ہونیوالے اس جوہری معاہدے کو بحال کرنے کیلئے مذاکرات کر رہی ہے جسے ٹرمپ انتظامیہ نے 2018ء میں منسوخ کردیا تھا۔ مبصرین کا خیال ہے کہ بلنکن کے مشرق وسطیٰ کے دورے سے ظاہر ہو رہا ہے ایران کیساتھ امریکہ کے جوہری معاہدے کے مذاکرات کامیابی سے مکمل ہونیوالے ہیں اور کسی وقت بھی معاہدے پر دستخط ہوسکتے ہیں۔

امریکہ 

مزید :

صفحہ اول -