قوم کو قائل کرنے کیلئے میرے پاس ٹھوس دلائل ہیں، مصطفی کمال  

  قوم کو قائل کرنے کیلئے میرے پاس ٹھوس دلائل ہیں، مصطفی کمال  

  

  کراچی (سٹاف رپورٹر) پاک سر زمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا کہ قوم کو قائل کرنے کے لیے میرے پاس ٹھوس دلائل ہیں، قوم کے جوانوں کے ہاتھوں میں ہتھیار صرف وہ دیگا جس کے پاس کوئی دلیل نہ ہو۔ ایم کیو ایم نے چالیس سال تک مہاجر نوجوانوں کو اپنے مفادات کے خاطر موت کے گھاٹ اتروایا,غریب کارکنان زندگی بھر جیلوں میں رہیں جبکہ رابطہ کمیٹی کی اولادیں بیرون ملک اعلی تعلیم حاصل کرتی رہیں۔ چالیس سال میں ایک بھی ہڑتال کوٹہ سسٹم یا محصورین پاکستان کیلئے نہیں کی، منفی لسانی سیاست سے مہاجروں کا نقصان سب سے زیادہ ہوا ہے۔ ہم کل تعلیم یافتہ تھے آج جاہل اور دہشت گرد کہلاتے ہیں۔ مہاجر بھلے مجھے بے شک ایک ووٹ بھی نہ دیں تب بھی میں لسانی سیاست کے خلاف رہونگا، چالیس سالوں میں گیارہ دفعہ الیکشن جیتنے  کے باوجود، بے حساب قربانیاں دینے پر آنے والی تین سو سال تک کی نسلوں کے مسائل حل ہو چکے ہوتے لیکن افسوس ایسا نہیں ہوا گیارہ دفعہ انتخابات تو جیت گئے لیکن ایک گٹر کا ڈھکن نہیں لگا سکتے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لیاقت آباد یوسی 41 بی ون ایریا منعقدہ عوامی رابطہ مہم سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ پی ایس پی وزارتوں کیلئے نہیں اپنی نسلوں کیلئے جدوجہد کر رہی ہے۔ لیڈر کا کام اپنی قوم کی فلاح اور نئی نسل کے لیے ترقی کے راستے پیدا کرنے ہوتا ہے، میں نے مہاجروں کے راستے سے کانٹے چنے ہیں۔ اسی شہر میں مہاجر نکل مکانی کر رہے تھے، کٹی پہاڑی اور لیاری سے گزر نہیں سکتے تھے،حالات تبدیل ہوچکے ہیں اب شہر میں لسانی نفرت کو ختم کرنا ہوگا۔ ہم نے پی ایس پی بناکر کسی پر جبری سیاست نہیں کی ایک پتھر کسی کو نہیں مارا۔ 19جون 1992 کا اخبار پڑھیں ایک دن میں اٹھارہ مہاجر لڑکوں کو کس نے قتل کیا، آج پاک سر زمین پارٹی کی وجہ سے شہر میں امن آیا ہزاروں کارکنان اپنے گھروں میں پر سکون زندگی گزارہے ہیں۔ ہم نے سب کو گلے لگایا اور صلح کروا کر عصبیت کی دیوار گرا دی۔

مزید :

صفحہ آخر -