چین مسئلہ کشمیر اور فلسطین کے پرامن، منصفانہ حل کا خواہاں، چینی قونصل جنرل 

  چین مسئلہ کشمیر اور فلسطین کے پرامن، منصفانہ حل کا خواہاں، چینی قونصل ...

  

       کراچی (آن لائن) کراچی میں تعینات چین کے قونصل جنرل لی بیجان نے کہا چین چاہتا ہے اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق مسئلہ کشمیر حل ہو اور فلسطین کا دیرینہ مسئلہ بھی پر امن طریقے سے حل کی طرف جائے، اسلام آباد میں او آئی سی کانفرنس اچھا اقدام ہے اس سے پوری دنیا میں امن کا پیغام جائیگا،یہ پہلا موقع ہے او آئی سی کانفرنس میں چین کے وزیرخارجہ نے بھی مبصر کی حیثیت سے شرکت کی،وہ التمش جنرل ہسپتال میں سولر انرجی کمپنی زونر جی سولر ڈیولپمنٹ پاکستان اور التمش ہسپتال کے درمیان 350 کے وی سولر منصوبے کے معاہدے کی تقریب کے موقع پر اظہار خیال اور میڈیا سے گفتگو کررہے تھے،اس موقع پر انرجی کمپنی کے سی ای او زوہانگ چنگ،جنرل منیجر وہانگ ہائے فنگ اور ہسپتال کے ایڈمنسٹریٹر کرنل (ر) منیر احمد نے بھی خطاب کیا،تقریب کے موقع پر انرجی کمپنی کے جنرل منیجر وہانگ ہائے فنگ اور ہسپتال کے ڈائریکٹر اعماد التمش نے معاہدے پر دستخط کئے،قونصل جنرل نے کہا اسلام آباد میں او آئی سی کانفرنس کا انعقاد پاکستان کیلئے اعزاز کی بات ہے اور کانفرنس کے ذریعے یہ پیغام گیا پاکستان مسلم دنیا کا ایک اہم ملک ہے،قونصل جنرل نے کہا پاکستان اور چین کے درمیان سماجی و معاشی شعبوں میں تعاون بڑھا ہے،چینی کمپنیاں پاکستان میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کررہی ہیں،جس سے پاکستان میں خوشحالی آئیگی، 2016 سے قبل پاکستان میں توانائی کا بحران تھا،جس کے بعد چینی کمپنیوں نے پاکستان میں بڑے پیمانے پر بجلی کے منصوبے مکمل کئے،جس سے پاکستان کی توانائی کی ضروریات پوری ہوئی، چینی کمپنیاں پاکستان میں نہ صرف تھرمل ہائیڈرل منصوبوں پر کام کررہی ہیں،بلکہ ونڈ اور سولر انرجی کے بھی منصوبے مکمل کئے جارہے ہیں،انرجی کمپنی کے سی ای اوزوہانگ چن نے کہا پاکستان میں انکی کمپنی 500  ملین ڈالر کی سرمایہ کاری کررہی ہے اور اب تک 400  میگاواٹ کے منصوبے مکمل کئے جاچکے ہیں،جبکہ بہاولپور میں 750 میگاواٹ کا بڑا منصوبہ بھی مکمل کیا جائیگا، کمپنی میں 200  افراد ملازمت کرتے ہیں جن میں چین کے لوگوں کے تعداد صرف 5 اور بقیہ سب پاکستانی ہیں، سولر انرجی کے منصوبوں سے آلودگی پر بھی قابو پایا جاسکے گا،تقریب میں التمش گروپ کے چیئرمین پروفیسر ڈاکٹر محمد التمش،چیئر پرسن ڈاکٹر شاہینہ التمش اور ڈاکٹر مرا د التمش نے بھی شرکت کی۔

چینی قونصل جنرل

مزید :

صفحہ آخر -