ڈاکٹرز کا غریب مریضوں پر وار، ڈیل کے بعد مخصوص کمپنیوں کی میڈیسن تجویز

ڈاکٹرز کا غریب مریضوں پر وار، ڈیل کے بعد مخصوص کمپنیوں کی میڈیسن تجویز

  

       ملتان (وقائع نگار)حکومتی پابندی کے باوجود ملتان سمیت جنوبی پنجاب کے بیشتر ڈاکٹروں ادویات کے سالٹ کی بجائے مخصوص کمپنوں کی مہنگی دوائی تجویز کرنے کا سلسلہ عروج پر پہنچ گیا۔ضلعی انتظامیہ اور ہیلتھ کیئر کمیشن کی جانب سے مذکورہ صورت حال پر مسلسل خاموشی۔شہری لٹنے پر مجبور ہوگئے۔ذرائع سے معلوم ہوا ہے ملتان سمیت جنوبی کے بیشتر ڈاکٹروں کے بارے میں اس بات کا انکشاف ہوا ہے کہ(بقیہ نمبر14صفحہ10پر)

 انہوں نے نجی فارما سوٹیکل کمپنیوں کے ساتھ گٹھ جوڑ کر رکھا ہے۔اور اسی وجہ سے ان کمپنیوں کی مخصوص دوائی مریضوں کیلئے تجویز کر رہے ہیں۔جو عام سالٹ سے بالکل مہنگی ہوتی ہے۔مریضوں کو ڈاکٹروں کی جانب سے مخصوص برانڈ کی مہنگی دوائی خریدنے پر مجبور کیا جاتا ہے اگر اس دوران کوئی مریض کسی اور کمپنی کے سالٹ کی دوائی خرید لیں۔تو انکو ڈرا دیا جاتا ہے کہ ہماری کوئی گارنٹی نہیں ہے کہ آپ کا مرض ٹھیک ہو یا نا ہو۔شہریوں نے جنوبی پنجاب کے ضلعی انتظامیہ اور ہیلتھ کیئر کمیشن کے اداروں سے مطالبہ کیا ہے۔کہ وہ فوری طور پر مذکورہ صورت حال نوٹس لیں۔اور بیشتر ڈاکٹروں کو کمیشن کمانے کے لالچ میں مہنگی دوائی تجویز کرنے سے روکیں۔تاکہ مہنگی دوائی کے بجائے اسکے متبادل سستا سالٹ لکھنے پر زور دیا جائے۔جبکہ دوسری جانب ڈاکٹروں کا کہنا ہے کہ نجی کمپینوں کا مخصوص دوائی لکھنے کا الزام سراسر غلط ہے۔مرض کے مطابق دوائی لکھی جاتی ہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -