کیاآپ دنیا کے محفوظ ترین شہر کا نام بتا سکتےہیں

کیاآپ دنیا کے محفوظ ترین شہر کا نام بتا سکتےہیں
کیاآپ دنیا کے محفوظ ترین شہر کا نام بتا سکتےہیں

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

بوگوٹا(مانیٹرنگ ڈیسک) بڑے شہروں میں ٹریفک کے مسائل ایک عام سی بات ہے،سڑکوں پر جہاں گاڑیوں کے ڈرائیور قانون شکنی کے مرتکب ہوتے ہیں وہاں پیدل چلنے والے افراد بھی سڑک پر چلتے ہوئے یا اسے عبور کرتے غیر معمولی غفلت کا مظاہرہ کرتے ہیں جس سے حادثات رونما ہوتے ہیں اور قیمتی جانیں ضائع ہوتی ہیں۔

مزیدپڑھیں:آسمان سے مکڑوں کی بارش،شہر والوں میں خوف و ہراس

دنیا بھر میں حکومتیں شہریوں کو سڑکوں پر محفوظ رکھنے کے لیے مختلف اقدامات کرتی ہیں، کئی قسم کے قوانین بنائے جاتے ہیں، جرمانے کیے جاتے ہیں لیکن صورتحال جوں کی توں رہتی ہے۔1990ءکے عشرے میں کولمبیا کے دارالحکومت بوگوٹا کے میئر انٹانس موکس نے ٹریفک قوانین پر عملدرآمد کروانے کے لیے ایک انوکھا طریقہ اپنایا اور آج یہ شہر ٹریفک حادثات کے حوالے سے دنیا کا محفوظ ترین شہرہے۔ انٹانس نے 400مسخروں کو بھرتی کیا اور انہیں شہر کی مختلف سڑکوں ، چوراہوں اور زیبرا کراسنگ پر کھڑا کر دیا اور انہیں ہدایت کی کہ جب کسی گاڑی کا ڈرائیور قانون شکنی کرے یا کوئی پیدل چلنے والا شخص سڑک عبور کرتے ہوئے غفلت کا مظاہرہ کرے تو وہ بغیر آواز کے، محض اشاروں سے اس کا تمسخر اڑائیں اور اس کی حرکت پر ناپسندیدگی کا اظہار کریں۔ انٹانس کے اس اقدام سے بوگوٹا میں ٹریفک قوانین کی خلاف ورزی صفر تک جا پہنچی اور آج بھی یہ شہر دنیا کا محفوظ ترین شہر ہے جہاں سب سے کم ٹریفک حادثات ہوتے ہیں۔

آج کی دنیا میں بڑے شہروں کوچوری و ڈکیتی جیسے عمومی جرائم سے زیادہ دہشت گردی اور سائبر کرائم سے خطرہ لاحق ہے۔ جیسا کہ نیویارک میں 1990ءمیں قتل کی 2ہزار245وارتیں ہوئی تھیں، آج ان میں واضح کمی دیکھنے میں آئی ہے، لیکن آج نیویارک جیسے شہر کو دہشت گردی اور سائبر کرائم جیسے خطرات کا سامنا ہے۔ ”سیف سٹیز انڈیکس“ کے مطابق دہشت گردی اور سائبر کرائم جیسے جرائم کے حوالے سے دنیا کا سب سے محفوظ ملک جاپان کا دارالحکومت ٹوکیو ہے جو دنیا کا گنجان آباد ترین شہر بھی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس