دہشتگرد کیا کم تھے کہ اب شہریوں نے ائیر لائنز کیلئے بڑا مسئلہ کھڑا کردیا،دنیا بھر کے مسافروں کو خطرہ

دہشتگرد کیا کم تھے کہ اب شہریوں نے ائیر لائنز کیلئے بڑا مسئلہ کھڑا ...
دہشتگرد کیا کم تھے کہ اب شہریوں نے ائیر لائنز کیلئے بڑا مسئلہ کھڑا کردیا،دنیا بھر کے مسافروں کو خطرہ

نیویارک(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ میں جعلی فون کالز کے ذریعے طیاروں میں بم کی جھوٹی اطلاع دینا فیشن بن گیا ہے۔ گزشتہ 2روز میں نامعلوم افراد نے 8پروازوں میں بم کی موجودگی کی اطلاع دی جس پر کئی ایئرپورٹس پر کھلبلی مچ گئی۔ حکام کا کہنا ہے کہ ایسے میں جب ایئرپورٹس اور طیاروں میں دہشت گردی کے واقعات کا خطرہ بہت زیادہ ہے، ایسا گھناﺅنا مذاق کرنے والے نہ صرف انٹیلی جنس ایجنسیوں کا وقت برباد کر رہے ہیں بلکہ مسافروں کی زندگیوں کو بھی داﺅ پر لگا رہے ہیں۔

برطانوی اخبار ڈیلی سٹار آن لائن کے مطابق ایک امریکی ایئرپورٹ انتظامیہ کے ذرائع نے بتایا کہ ایسا نہیں ہو سکتا کہ ہر بار اطلاع جھوٹی ہو اور دہشت گردی کا کوئی واقعہ نہ ہو، کبھی کوئی سچی کال بھی ہو سکتی ہے اور ہمیں اس حوالے سے شدید تحفظات ہیں۔ افواہیں پھیلانے والے صرف یہ دیکھتے ہیں کہ ٹیلی ویژن پر یا خبروں میں کیا ایشو اہم جا رہا ہے اور بس فون اٹھا کر کال کر دیتے ہیں۔ ذرائع نے انکشاف کیا کہ اس ایک ماہ میں ہمیں ایسی درجنوں کالز موصول ہو چکی ہیں۔ اس سے نہ صرف وقت کا ضیاع ہو رہا ہے بلکہ شہریوں کے تحفظ کو بھی خطرات لاحق ہو گئے ہیں۔

امریکہ میں بم کی جھوٹی اطلاع دینا جرم ہے جس پر مجرم کو جیل بھی ہو سکتی ہے، کئی ریاستوں میں تو بغیر کسی خطرے کے ایئرپورٹس پر موجود الارم بجانا بھی جرم ہے۔گزشتہ روز کسی نامعلوم افراد کی طرف سے فون پر بتایا گیا کہ تاپی سے تائیوان جانے والی پرواز میں بم ہے، پرواز اس وقت لاس اینجلس ایئرپورٹ پر کھڑی تھی، پولیس نے طیارے کو چاروں طرف سے گھیر لیا، مسافروں کو اتار کر ان کے سامان کی دوبارہ سکیننگ کی گئی لیکن کچھ برآمد نہ ہوا۔ چند گھنٹے بعد ہی ایئرپورٹ انتظامیہ کوفون کال کے ذریعے ایک اور طیارے میں بم کی اطلاع دی گئی۔

ان افواہوں کے متعلق خیال کیا جا رہا ہے کہ یہ امریکہ میں مقیم تارکین وطن کی طرف سے پھیلائی جا رہی ہیں اور جہازوں کی دوبارہ چیکنگ محض احتیاطی تدابیر کے پیش نظر کی جا رہی ہے۔

مزید : ڈیلی بائیٹس

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...