انجمن اتحاد ترقی میوات کے عہدیداروں کو نوٹس جاری

انجمن اتحاد ترقی میوات کے عہدیداروں کو نوٹس جاری

لاہور( نامہ نگار) سول عدالت نے دیرینہ ممبر کی درخواست پر انجمن اتحاد ترقی میوات کے عہدیداروں کو نوٹس جاری کرتے ہوئے 28 مئی کو جواب طلب کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق حاجی محمد عاشق نے چودھری محمد ارشد فتح ایڈووکیٹ کی وساطت سے سول جج ظہیر احمد کی عدالت میں حکم امتناعی کی درخواست میں موقف اختیار کیا ہے کہ انجمن اتحاد و ترقی میوات کے زیر اہتمام موضع بدوکی میں میو ٹیکنیکل کالج کے لئے حاجی نواز خاں‘ حاجی مواسی‘ حاجی چاند خاں نے 49 کنال 19 مرلہ اراضی وقف کی جس کا مقصد میو برادری کے بچوں کی فلاح و بہبود کے لئے تعلیمی ادارہ قائم کرنا تھا۔    جسکے کے لئے فنڈز کی ضرورت تھی 1991 میں چودھری ارشد خاں ایڈووکیٹ صدر منتخب ہوئے اور انہوں نے اور ان کے ساتھیوں نے ادارے کی بہتری کے لئے فنڈز ریزنگ کی اور تقریباً 4 لاکھ کے عطیات جمع کئے جسکی بدولت ایڈمنسٹریٹر بلاک کی بنیاد رکھی اپریل 2014 میں شہزاد جواہر صدر منتخب ہوئے انہوں نے انجمن کی ترقی کے لئے کوئی اقدامات نہ کئے جبکہ ایک نجی تعلیمی ادارے پہلے 25 سال اور پھر 20 سال کا معاہدہ کرکے ادارے کے مکمل انتظام و انصرام کا اختیار انہیں سونپنے کا منصوبہ بنایا دعویٰ میں موقف اختیار کیا گیا ہے موجودہ نو منتخب قیادت نے انجمن کے قواعد و ضوابط اور ضابطہ اخلاق اور حلف کی خلاف ورزی کرتے ہوئے کروڑوں روپے کی اراضی انتہائی نامناسب شرائط پر45 سال کے لئے معمولی رقم کے عوض نجی تعلیمی ادارے کے حوالے کئے جانے کا منصوبہ بنایا جارہا ہے جو انجمن کے اغراض و مقاصد کی نفی پوری قوم کے حقوق کو سلب کرنے کے مترادف ہے عدالت نے انجمن ہذا کی قیادت کو نجی ادارے سے معاہدہ کرنے سے روکتے ہوئے عدالت نے دیرینہ ممبر کی درخواست منظور کرتے ہوئے تا حکم ثانی انجمن ہذا کو معاہدہ کرنے سے روکتے ہوئے انجمن ہذا کی قیادت کو 28 مئی کے لئے نوٹس جاری کرتے ہوئے جواب طلب کرلیا۔

مزید : میٹروپولیٹن 4