پنجاب میں جس کی لاٹھی اس کی بھینس والا قانون رائج ہے،منظور وٹو

پنجاب میں جس کی لاٹھی اس کی بھینس والا قانون رائج ہے،منظور وٹو

لاہور(نمائندہ خصوصی )پیپلز پارٹی پنجاب کے صدرمیاں منظور احمد وٹو نے کہا ہے کہ پنجاب میں جس کی لاٹھی اس کی بھینس والا قانون رائج ہے،حکومت حقائق چھپانے کیلئے ماڈل ٹاؤن سانحہ کی جوڈیشل کمیشن رپورٹ شائع کرنے سے گریزاں ہے،صوبے میں قیام امن کیلئے پولیس میں پوسٹنگ اور ٹرانسفر کے ضمن میں سیاسی اثرورسوخ کوپوری طرح ختم کرنا ہوگا،سانحہ ڈسکہ کے مقتولین رانا خالد عباس اور عرفان چوہان کے ورثاء سے ملاقات کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے منظور وٹو کا کہنا تھا کہ موجودہ حکومت نے ملک میں ایسی فضاء قائم کر دی ہے جہاں پر طاقتوروں کے لیے کوئی قانون نہیں ہے اور وہ سرعام اسکی دھجیاں اڑاتے ہیں کیونکہ ان کو معلوم ہے کہ ان کو کوئی پوچھنے والا نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت حقائق چھپانے کیلئے ماڈل ٹاؤن سانحہ کی جوڈیشل کمیشن کی رپورٹ شائع کرنے سے گریزاں ہے کیونکہ ان کو یقین ہے کہ اس میں حکمرانوں کو اس سانحہ کا ذمہ دار قرار دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب تک پولیس میں پوسٹنگ اور ٹرانسفر کے ضمن میں سیاسی اثرورسوخ پوری طرح ختم نہیں ہوگا پنجاب میں امن عامہ کی صورت بہتر ہونے کی بجائے خراب سے خراب ہوتی جائے گی۔ میاں منظور احمد وٹو کے ہمراہ تنویر اشرف کائرہ، سہیل ملک، چوہدری اسلم گل، راجہ عامر خان ، ایڈووکیٹ سپریم کورٹ کے علاوہ مقامی پیپلز پارٹی کے عہدیدار اور کارکن بھی تھے۔ منظور وٹو

مزید : صفحہ آخر

لائیو ٹی وی نشریات دیکھنے کے لیے ویب سائٹ پر ”لائیو ٹی وی “ کے آپشن یا یہاں کلک کریں۔


loading...