چین کا اہم منصوبہ تکمیل کے مراحل میں،امریکہ اور مغربی طاقتیں اکھٹی ہو گئیں

چین کا اہم منصوبہ تکمیل کے مراحل میں،امریکہ اور مغربی طاقتیں اکھٹی ہو گئیں
چین کا اہم منصوبہ تکمیل کے مراحل میں،امریکہ اور مغربی طاقتیں اکھٹی ہو گئیں

  

بیجنگ (نیوز ڈیسک) بحیرہ جنوبی چین میں امریکہ اور چین کے درمیان تنازعہ شدت اختیار کرگیا ہے اور مغربی میڈیا نے دعویٰ کیا ہے کہ چین نے حال ہی میں بنائے گئے مصنوعی جزیرے پر بھاری اسلحہ بھی نصب کردیا ہے اور یہ بڑا دفاعی منصوبہ تکمیل کے آخری مراحل میں ہے۔

مزیدپڑھیں:مودی سرکار نے اربوں ڈالر اسلحہ خریدنے میں جھونک دیے

امریکہ کی طرف سے چین کو خبردار کیا گیا تھا کہ علاقے میں کام کرنے والی اس کی نیوی کو چیلنج نہ کیا جائے جبکہ دھمکی کے انداز میں یہ بھی کہا گیا کہ درست دماغ رکھنے والا کوئی بھی ملک ایساکرنے کی کوشش نہیں کرے گا۔ اب مغربی میڈیا کا کہنا ہے کہ امریکہ کی دھمکیاں کسی کام نہیں آئیں اور چین نے نہ صرف متنازعہ علاقے میں بڑے رقبے پر مشتمل مصنوعی جزیرہ بنالیا ہے بلکہ اس پر بھاری اسلحہ نصب کرنے کے بعد علاقے میں اپنا کنٹرول مضبوط کرلیا ہے۔ امریکہ کے ساتھ ساتھ آسٹریلوی فوج نے بھی خدشہ ظاہر کیا ہے کہ چین علاقے میں اپنی فوجی طاقت بڑھا رہا ہے اور اس اقدام کے ساتھ بحیرہ جنوبی چین میں چین کی جانب سے فضائی نگرانی میں اضافہ ہوجائے گا اورہوائی جہازوں پر حملہ کرنے والے ہتھیار بھی بڑا خطرہ بن سکتے ہیں۔ نئی صورتحال کے پیش نظر مغربی طاقتوں نے اکٹھے ہو کر منصوبہ بندی شروع کر دی ہے۔

اس سے پہلے متعدد بار امریکہ کی طرف سے چین کو خبردار کیا جاچکا تھا کہ بحیرہ جنوبی چین کے متنازعہ علاقے میں جزیرے کی تعمیر نہ کی جائے، جبکہ چین کی طرف سے جاری کی گئی ایک سٹریٹجک دستاویز میں واضح کیا گیا تھا کہ چینی بحریہ اپنے ساحلوں کی روایتی دفاع کی پالیسی میں کھلے سمندروں کی حفاظت کے نقطے کا بھی اضافہ کرے گی جبکہ ایئرفورس روایتی ایئر ڈیفنس کے ساتھ دفاع اور حملے کی پالیسی اپنانے کی کوشش کرے گی۔

مزید : بین الاقوامی