بھارتی طیاروں میں چوہوں نے کھلبلی مچا دی ،فضائی عملے کی دورڑیں

بھارتی طیاروں میں چوہوں نے کھلبلی مچا دی ،فضائی عملے کی دورڑیں
بھارتی طیاروں میں چوہوں نے کھلبلی مچا دی ،فضائی عملے کی دورڑیں

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) بھارت کی قومی ایئرلائن کا معیار اب اس حال کو پہنچ گیا ہے کہ طیاروں میں پے درپے چوہے برآمد ہونے لگے ہیں اور تازہ ترین واقع شمالی شہر لیح میں پیش آیا ہے جہاں طیارے میں چوہا ملنے کے بعد اسے گراﺅنڈ کردیا گیا ہے کیونکہ اس ایئرپورٹ پر جراثیم کش چھڑکاﺅ کا انتظام بھی نہیں ہے۔

مزیدپڑھیں:دہشت گردکیا کم تھے کہ اب شہریوں نے ایئرلائنز کیلئے بڑا مسئلہ کھڑا کردیا،دنیا بھر کے مسافروں کو خطرہ

بھارتی میڈیا کے مطابق ہمالیہ کے پہاڑوں میں واقع لیح ایئرپورٹ پر موجود ایئربس A320 میں چوہوں کے انکشاف کے بعد عملے میں پریشانی کی لہر دوڑ گئی۔ مزید تشویشناک بات یہ تھی کہ طیارے میں جراثیم کش ادویات کے چھڑکاﺅ کے لئے مطلوبہ سامان ایئرپورٹ پر دستیاب نہ تھا جس کی وجہ سے طیارے کو پرواز کی اجازت نہیں مل سکی۔ فضائی ضوابط کے مطابق اگر طیارے میں چوہے کا انکشاف ہو تو اسے نکالنا ضروری ہے جبکہ اس کے بعد جراثیم کش ادویات کا چھڑکاﺅ کرکے کچھ گھنٹے کے لئے طیارے کو مکمل طور پر بند رکھنا بھی ضروری ہے ۔ لیح ایئرپورٹ پر جراثیم کش چھڑکاﺅ کی سہولت نہ ہونے کی وجہ سے یہ سامان دلی سے آنے کا انتظار کیا جارہا ہے، اور جب تک یہ ممکن نہیں ہوتا طیارے کو پرواز کی اجازت نہیں مل سکتی۔

لیح ایئرپورٹ کا شمار دنیا کے بلند ترین ایئرپورٹوں میں ہوتا ہے۔ یہ سطح سمندر سے 10500 فٹ کی بلندی پر واقع ہے اور اسی ایئرپورٹ پر کھڑے طیاروں میں پہلے بھی چوہوں کا انکشاف ہوچکا ہے۔ بھارت کی قومی ایئرلائن چوہوں کی وجہ سے خاص طور پر بدنام ہے اور ماضی میں بھی ایسے کئی واقعات پیش آچکے ہیں۔ایئر انڈیا کی نئی دلی سے لندن جانے والی پرواز کے کاک پٹ میں چوہا دوڑتا ہوا پایا گیا جس کی اطلاع پائلٹ نے متعلقہ حکام کو دی۔ اسی طرح 2009ءمیں امرتسر سے ٹورنٹو جانے والی ایئرانڈیا کی پرواز میں چوہے کی موجودگی کی وجہ سے اسے روکنا پڑا۔ چوہے کی تلاش میں اس قدر تگ و دو کرنا پڑی کہ جہاز کی روانگی میں غیر معمولی تاخیر واقع ہوگئی اور مسافروں کو ایک دوسرے جہاز کے ذریعے روانہ کرنا پڑا۔

مزید : ڈیلی بائیٹس