حکومت پھر ہاتھ کرگئی ،پن بجلی کی پیداوار بڑھی تو آئی پی پیز اور تھرمل پیداوار کم کردی 

حکومت پھر ہاتھ کرگئی ،پن بجلی کی پیداوار بڑھی تو آئی پی پیز اور تھرمل پیداوار ...
حکومت پھر ہاتھ کرگئی ،پن بجلی کی پیداوار بڑھی تو آئی پی پیز اور تھرمل پیداوار کم کردی 

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائیڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کے لیے یہاں کلک کریں۔

لاہور(صبغت اللہ چودھری) گرمیوں میں کم سے کم لوڈ شیڈنگ کے حکومتی دعوے کا پول کھل گیا ہے .ڈیموں میں پانی کی بے تحاشا آمد کے بعد ہائیڈل پیداوار 6 ہزار میگاواٹ ہو گئی ہے تاہم اس کا ریلیف عوام کو نہیں ملے گا کیونکہ حکومت نے ہائیڈل کی پیداوار بڑھنے پرآئی پی پیز اور تھرمل کی پیداوار کم کر دی ہے ۔ پانچ بند پڑے آئی پی پیز کے لئے حکومت کی جانب سے کوئی سنجیدہ اقدام تا حال نہیں کیا گیا اگر پانچ بند آئی پی پیز چالو ہو جائیں تو سسٹم میں 980 میگا واٹ بجلی آ جائے گی ۔ حکومت کے اس اقدام سے پیداوار میں 2706 میگا واٹ کی کمی ہوئی ہے ۔ ارسا کی جانب سے ڈیموں سے پانی کے اخراج میں اضافہ کے باعث ہائیڈل کی پیداوار بڑھ کر چھ ہزار میگا واٹ ہو گئی ۔ 2 روز قبل تربیلا سے ارسا کی جانب سے 95 ہزار کیوسک جبکہ منگلا سے 60 ہزار کیوسک پانی کا اخراج کیا گیا جس سے ہائیڈل کی پیداوار بڑھی ۔ ہائیڈل کی پیداوار بڑھنے پر ائی پی پیز اور حکومتی تھرمل یونٹوں کو گیس و بجلی کی فراہمی میں کمی کر دی گئی جس سے تھرمل اورآئی پی پیز کی پیداوار میں 2706 میگا واٹ کی کمی آ گئی ۔ اگر حکومت کی جانب سے تھرمل اور آئی پی پیز کی پیداوار کم نہ کی جاتی تو شارٹ فال کم ہو کر چار ہزار میگاو اٹ تک رہ جاتا جس سے لوڈ شیڈنگ کے دورانیہ میں نمایاں کمی ہوتی ۔ آئی پی پیز کو گیس و تیل کی فراہمی میں کمی سے آئی پی پیز کی پیداوار میں 1635 میگا واٹ ، تھرمل یونٹوں کی پیداوار میں 521 اور کوٹ ادو کی پیداوار میں 550 میگا واٹ کی کمی ہوئی ہے ۔آئی پی یز کی پیداوار جو پیر کو7300 میگاواٹ تھی کم ہو کر 5665 میگا واٹ ہو گئی ۔ حکومتی تھرمل یونٹوں کی پیداوار جو پیر کو 2450 میگا واٹ تھی کم ہو کر 1929 میگا واٹ کی سطح پر آ گئی ۔ کوٹ ادو کو لائٹ فرنس آئل کی سپلائی کم کئے جانے سے کوٹ ادو کی پیداوار 1250 میگا واٹ سے کم ہو کر 700 میگا واٹ ہو گئی۔آئی پی پیز سیف ، سفائر ، اورینٹ اور ہالمور میں سے صرف دو کو گیس فراہم کی جا رہی ہے دو پلانٹ بند پڑے ہیں جس کے باعث ان یونٹوں سے صرف 210 میگاواٹ بجلی حاصل ہو رہی ہے اگر دو یونٹوں کو بھی گیس فراہم کر دی جائے تو ا ن یونٹوں سے 840 میگا واٹ بجلی حاصل ہو سکتی ہے ۔ ائی پی پیز جاپان ، سپکول اور صبا حکومت کی جانب سے ادائیگیاں نہ کئے جانے کے باعث بند پڑے ہیں ۔ ان تینوں یونٹوں کو ادائیگی کر دی جائے تو ان سے 350 میگا واٹ پیداوار حاصل ہو سکتی ہے ۔ 

مزید : لاہور