صوبہ بہاولپور سے متعلق زمینی حقائق نہیں بدلے کچھ لوگوں کے مفادات بدل گئے ہیں ‘ تابش الوری

صوبہ بہاولپور سے متعلق زمینی حقائق نہیں بدلے کچھ لوگوں کے مفادات بدل گئے ہیں ...

  



 بہاول پور (بیورورپورٹ ) صوبہ بہاولپور سے متعلق زمینی حقائق نہیں بدلے کچھ لوگوں کے زمینی مفادات بدل گئے ہیں مخالف (بقیہ نمبر34صفحہ12پر )

صوبہ منتخب اراکین اسمبلی کو آئندہ انتخابات میں اپنی بھیانک غلطی کا احساس ہوگا ۔ معروف پارلیمنٹیرئن اور تحریک بحالئی صوبہ بہاولپور کے سینئر رہنما سید تابش الوری نے وفاقی وزیر مخدوم خسرو کے بیان پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ انھیں اپنے بڑوں کا ہی خیال اور احترام کر لینا چاہئے تھا جو بحالئی صوبہ کے زبردست حامی تھے اور بہاولپور متحدہ محاذ کے ٹکٹ پر کامیاب ہوئے تھے آج وہ جن نشستوں پر کامیاب ہو رہے ہیں وہ انہی بزرگوں کا عطیہ ہیں یاد رکھیں ہمیشہ اپنی دھرتی ہی عزت دیتی ہے جنوبی پنجاب کے مخدوموں سسرداروں اور وڈیروں کے آگے انکی کیا حیثیت ہوگی انھیں اس کا ادراک ہونا چاہئے سید تابش الوری نے کہا کہ مخدوم زادہ حسن محمود نے 1970 کے انتخابات میں ایسی ہی فاش غلطی کی تھی اور قومی سیاست سے آوٹ ہوگئے تھے وہ صوبہ بہاولپور کے سابق وزیر اعلی مغربی پاکستان کے اہم وزیر رہے تھے پنجاب کے وزیر اعلی بننے کی خوش گمانی میں انھوں نے اپنی دھرتی سے بے وفاءکی اور تحریک بہاولپور کی مخالفت کر بیٹھے نتیجے کے طور پر 1970 کے عام انتخابات میں تینوں قومی اسمبلی کی نشستوں سے بری طرح ہار گئے اور ہمیشہ ہمیشہ کے لئے بہاولپور اور قومی سیاست کے میدان سے باہر ہوگئے انھوں نے کہا کہ ماضی کیطرح بہاولپور کے عوام کو اب بھی اپنے منتخب نمائندوں کے کردار پر کڑی نظر رکھنی ہوگی تاکہ کسی کو اپنی دھرتی سے بے وفائی کی جرات نہ ہو سکے۔

تابش الوری

مزید : ملتان صفحہ آخر


loading...