بھارت کیساتھ پس پردہ نہیں،فرنٹ ڈور ڈپلومیسی ہی کامیاب ،ڈاکٹر محمد فیصل 

  بھارت کیساتھ پس پردہ نہیں،فرنٹ ڈور ڈپلومیسی ہی کامیاب ،ڈاکٹر محمد فیصل 

  



 اسلام آباد (صباح نیوز)ترجمان دفتر خارجہ ڈاکٹر محمد فیصل نے ایک ٹی وی انٹرویو میں کہا ہے کہ جب تک آپ کا بیک چینل اور فرنٹ چینل ساتھ ، ساتھ نہیں چلیں گے ، آپ بیک چینل پر بہت آگے نکل جائیں گے اور فرنٹ چینل کہیں اور کھڑا ہو گا جو باضابطہ چینل ہے جیسے ہم ٹی وی پر بات کر رہے ہیںجو عوامی رائے کو لے کر چل رہا ہے ، عوامی رائے شائد پاکستان اور بھارت میں کہیں اور کھڑی ہو اور بیک چینل کو آپ زیادہ آگے لے جائیں گے تو معاملہ منقطع ہو جائے گا، جیسے تاریخ میں نہیں چلا ۔ ان کا کہنا تھا کہ جب بھی آپ آگے چلیں توزیادہ کوشش کریں کہ فرنٹ چینل پر چلیں ، اگر بند کمرے میں بیٹھ کر کوئی فیصلہ کرلیتے ہیں تو جب اسے باہر لاتے ہیں تو وہ بکتا نہیں ہے پاکستان اور بھارت کی قیادت اگر ملنا چاہے تو وہ کسی خاص موقع کی محتاج نہیں ہے، اگر ارادہ ہے تو فون اٹھا کر بات کرنی ہے اور مل لینا ہے دونوں ملک ہمسائے ہیں۔ سوا ل یہ ہے کہ ملاقات کا ارادہ ہے کہ نہیں۔ جو مسائل ہیں یا تحفظات ہیں ان پر ہم نے قابو پانا ہے، سیاچن اور سرکریک کے مسائل ہیں وہاں بھارت کی فوجیں بھی پھنسی ہوئی ہیںاس سے نکلنا ضروری ہے اس کے لئے بھی گفتگو کی ضرورت ہے، ہماری یہ بھی خواہش ہے کہ دونوں ملکوں کے لوگوں کے درمیان بھی روابط بڑھیں۔ ان کا کہنا تھا پاکستان ایک ذمہ دار قوم ہے اور ہم کلبھوشن یادیو کیس میں عالمی عدالت انصاف گئے ہی اس لئے تھے کہ ہمیں اس عدالت پر پورا یقین ہے اگر ایسا نہ ہوتا تو ہم نہ جاتے ۔ عدالت کے فیصلہ پر عمل کیا جائے گا۔ عالمی عدالت انصاف کا فیصلہ جولائی یاپھر ستمبر میں آسکتا ہے۔ بات چیت کے لیے بیٹھیں گے تو یقیناًان کے بھی تحفظات ہوں اور ہمارے بھی تحفظات ہوں گے اور ایک دوسرے کو سمجھتے ہوئے اور مسائل کو حل کرتے ہوئے آگے چل سکیں گے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ہم نے اپنے 70سالہ مسائل کا حل کرنا ہے تو پبلک اوپینین کو ساتھ لے کر چلنا پڑے گا، اگر یہ نہیں کریں گے آپ آگے نہیں بڑھ سکتے ۔

مزید : صفحہ آخر


loading...