چھوٹے دکاندزاروں سے فکسڈ ٹیکس لینے کا فیصلہ، قوم ساتھ نہیں دے گی تو ٹیکس ٹارگٹ مشکل ہو جائے گا: چیئر مین ایف بی آر

چھوٹے دکاندزاروں سے فکسڈ ٹیکس لینے کا فیصلہ، قوم ساتھ نہیں دے گی تو ٹیکس ...

  



اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) فیڈرل بورڈ آف ریونیوکے چیئرمین شبر زیدی نے کہا ہے کہ چھوٹے دکانداروں سے فکسڈ ٹیکس لینے کا فیصلہ کیا ہے،قوم ساتھ نہیں دے گی تو ٹیکس ٹارگٹ مشکل ہو جائے گا، پاکستان میں ٹیکس کی وصولی بہت کم ہوتی ہے، ہم نظام کو بہتر بنا رہے ہیں۔نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی نے کہا کہ ہم نے بڑا ٹارگٹ سامنے رکھا ہے۔ لانگ ٹرم سٹرٹیجی کے تحت کام کر رہے ہیں، ہم سارا ڈیٹا اکٹھا کر رہے ہیں اور اس سلسلے میں ماہرین سے بھی اس حوالے سے رائے لی جائے گی۔شبر زیدی نے کہا کہ ہم نے تاجر برادری کو اعتماد دینا ہے، انکم ٹیکس افسران جب تنگ نہیں کریں گے لوگ خود ٹیکس دیں گے کیونکہ معیشت کی بہتری کیلئے کاروباری افراد کو اعتماد دینا ضروری ہے۔انہوں نے کہا کہ انگریزی میں لکھے ٹیکس قوانین عام آدمی سمجھ بھی نہیں سکتا۔ ایف بی آر کے قانون کی زبان کو سلیس اور آسان بنا رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ 2018ء تک تمام حکومتوں نے رئیل انکم ٹیکسیشن کو ختم کیا۔ بزنس مین کو یقین دلاتا ہوں کہ ٹیکس افسر ہراساں نہیں کرینگے۔ ہم ٹیکس کے ہدف کو حاصل کرنے کی صلاحیت رکھتے ہیں۔ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے شبر زیدی نے کہا کہ تاجر برادری کو ساتھ لے کر چلیں گے، ہم نے اس مسئلے کو حل کرنا ہے لہٰذاچھوٹے تاجروں کیلئے قوانین کو آسان بنایا جائے گا،ہمیں مایوسی کے بجائے اب عملی اقدامات کرنا ہوں گے۔

چیئرمین ایف بی آر

مزید : صفحہ اول


loading...