قمری کیلنڈر کے لئے فواد چودھری کی عجلت؟

قمری کیلنڈر کے لئے فواد چودھری کی عجلت؟

  



وفاقی وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی فواد چودھری نے نہ صرف پانچ سالہ قمری کیلنڈر بنوا لیا بلکہ چاند کے لئے ویب سائٹ بھی متعارف کرا دی ہے۔ وفاقی وزیر نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ یہ کیلنڈر اور ویب سائٹ سافٹ ویئر اسلامی نظریاتی کونسل سے مشاورت کے لئے بھیجا جائے گا اور اگلے روز ہونے والے وفاقی کابینہ کے اجلاس میں بھی منظوری کے لئے پیش کیا جائے گا۔ لگتا ہے فواد چودھری بہت جلدی میں ہیں انہوں نے نظریاتی کونسل کی رائے اور وفاقی کابینہ کی منظوری سے قبل ہی نہ صرف قمری کیلنڈر اور سافٹ ویئر متعارف کر دیا بلکہ پانچ سالوں کے لئے عیدالفطر کی تاریخوں کا بھی اعلان کر دیا اور کہا کہ اب رویت کے لئے علماء کرام کی ضرورت نہیں۔ملک میں پہلے ہی مسائل کا انبار ہے۔ اس پر فواد چودھری نے رویت کا یہ معاملہ شروع کر دیا ہے اور اصرار بھی کر رہے ہیں، جبکہ ان کا رویہ علماء کرام کے لئے طنزیہ ہے، حالانکہ اب تک انہوں نے ممتاز عالم دین اور رویت ہلال کمیٹی کے چیئرمین مفتی منیب الرحمن کا سامنا بھی نہیں کیا۔ مجلس قائمہ یا سلیکٹ کمیٹی کے بلانے پر وہ نہیں گئے تھے۔ فواد چودھری کی طرف سے قمری کیلنڈر تیار کرنا، رویت کے لئے جدید ٹیکنالوجی کی مدد لینا ایسے امور ہیں جن سے کسی کو کوئی اختلاف نہیں، تاہم مسئلہ رویت کی تشریح کا ہے، کون ایسا پاکستانی اور دنیا بھر میں ایک بھی ایسا مسلمان ہے جو متفقہ رمضان المبارک اور عید نہیں چاہتا، لیکن ایسا ہو نہیں پا رہا، جس کی وجہ مسلکی اختلاف بھی ہے۔ ضرورت تو اس امر کی ہے کہ ان مسائل کا حل تلاش کیا جائے کیونکہ اگر وزیرسائنس کیلنڈر کا اجراء کرا بھی لیں تو چاند کا اختلاف ختم نہ کرا سکیں گے اور پھر بھی سرکاری اور غیر سرکاری عید ہو گی جیسا اب بھی ہوتا ہے کہ سرکاری سطح پر مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا فیصلہ تسلیم کیا جاتا ہے، جسے تمام جدید وسائل کی بھی معاونت حاصل ہوتی ہے، تاہم بعض علماء اور ان کے پیروکار اس سے اختلاف کر جاتے ہیں اور وہ سعودی عرب کے ساتھ روزہ رکھتے اور عید کرتے ہیں، یہ سلسلہ تو کیلنڈر کے اجراء اور منظوری کے بعد بھی ہوگا ویسے وزیر سائنس، وزارت مذہبی امور کے ساتھ ایک صفحہ پر نہیں ہیں، فواد چودھری نے بغیر منظوری 5جون کی عید کا اعلان کر دیا اور رویت ہلال کمیٹی کو غیر ضروری قرار دیا جبکہ وزارت مذہبی امور نے نیا نوٹیفکیشن جاری کرکے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کی تشکیل نو کر دی ہے، فواد چودھری پہلے اپنا گھر تو درست کریں، وزیر موصوف نے کیلنڈر متعارف کراتے ہوئے پانچ سال کی عید کے لئے جو تاریخیں متعین کی ہیں اس سے بزرگوں کا فلسفہ بھی ثابت ہوا، یوں وہ بڑے ”آئین سٹائین“ ہوئے۔ بزرگوں کے بقول قمری اور عیسوی تاریخوں کے درمیان سالانہ گردش میں دس روز کا فرق ہوتا ہے چنانچہ جس روز عیدالفطر کا چاند ہو گا اور عید ہو گی اگلے سال اس سے دس روز پہلے ہوگی۔ فواد اپنا سائنسی حساب اس روائت سے ملا کر دیکھ لیں۔ہماری تو ان سے درخواست ہے کہ وہ قمری کیلنڈر پانچ سال نہیں سو سال کے لئے رائج کریں اور سافٹ ویئر بھی بنوا کر عام کریں لیکن دینی امور میں مداخلت سے گریز کریں یہ تنازعہ مناسب نہیں، بات جو بھی کرنا ہے وہ علماء کرام سے بالمشافہ تبادلہ خیال اور دین کی روشنی میں دلائل سے قائل کریں یا پھر خود تسلیم کر لیں۔

مزید : رائے /اداریہ


loading...