ہمیں نیوکلئیر ٹیکنالوجی پر امن مقاصد کیلئے استعمال کرنا چاہئے، شیریں مزاری

ہمیں نیوکلئیر ٹیکنالوجی پر امن مقاصد کیلئے استعمال کرنا چاہئے، شیریں مزاری

  



اسلام آباد(صباح نیوز)وفاقی وزیر انسانی حقوق، ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہا ہے کہ پاکستان نے ایٹمی قوت بننے کے ساتھ ساتھ نیوکلئیر ٹیکنالوجی کو پر امن مقاصد کیلئے استعمال کرنے کی صلاحیت حاصل کر لی ہے۔بین الاقوامی قوانین میںایٹمی توانائی کے پرامن مقاصد کے استعمال بلکہ ایٹمی دھماکوں کی اجازت بھی موجود ہے۔انہوں نے کہاکہ ہمیں نیوکلئیر ٹیکنالوجی زیادہ سے زیادہ پر امن مقاصد کیلئے استعمال کرنا چاہئے۔پاکستان کی نیوکلیئر ٹیکنالوجی خطے میں قیام امن اور خطے میں طاقت کا توازن برقرار رکھنے کیلئے اہم ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو یہاں سٹریٹجک سٹڈیز انسٹیٹیوٹ اسلام آباد کے زیر اہتمام نیوکلئیر پاکستان اورپرامن مقاصد کیلئے ایٹمی ٹیکنالوجی کے استعمال کے موضوع پر ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہاکہ این پی ٹی معاہدے کرنے والوں نے خود اس معاہدے کو تباہ کردیا۔این پی ٹی پر دستخط کرنے والے ممالک امریکہ، جاپان برطانیہ سمیت دیگر نے بھارت کے ساتھ ایٹمی معاہدے کر کے این پی ٹی معاہدے کی خلاف ورزی کی ہے۔انہوں نے کہاکہ آئی اے ای اے ایٹمی ہتھیاروں کی نگرانی بہتر انداز میں کر رہاہے۔تاہم اسے نیوکلئیر توانائی کے پرامن مقاصد کے استعمال کو یقینی بنانے کیلئے اپنا کردار ادا کرنا چاہئے۔وفاقی وزیر نے کہاکہامریکہ نے ایران پر یکطرفہ پابندیاں عائد کی ہیں۔یہ پابندیاں بین الاقوامی قانون کے تحت نہیں ہیں اور نہ ہی یہ اقوام متحدہ کی پابندیوں کی طرح نافذالعمل نہیں ہیں۔انہوں نے کہاکہ ہمیں ایٹمی ہتھیاروں کے کمرشل استعمال پرتوجہ دینی چاہیئے۔وفاقی وزیر نے کہاکہ اگر بھارت کو نیوکلیئر سپلائرز گروپ کا رکنیت ملتی ہے تو اس امتیازی سلوک کے حوالے سے ہمارے خدشات کو تقویت ملے گی۔وزارت خارجہ کو اس حوالے سے مزید موثر سفارتکاری پر توجہ مرکوز کرنی چاہئے۔موجودہ حکومت قومی مفاد میں نیوکلیئر ٹیکنالوجی کے پرامن مقاصد کیلئے بروئے کار لانے کییلئے پر عزم ہے۔وفاقی وزیر نے کہاکہ پاکستان اپنے ایٹمی پروگرام کو سول نیوکلئیر پروگرام کی جانب منتقل کر رہاہے۔

شیریں مزاری

مزید : علاقائی


loading...