پانی کے بحران سے عوام پریشان، حکومت خاموش تماشائی ہے: حافظ نعیم الرحمن 

پانی کے بحران سے عوام پریشان، حکومت خاموش تماشائی ہے: حافظ نعیم الرحمن 

  



کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا ہے کہ شہر میں پانی کے بحران نے شدت اختیار کرلی ہے اور عوام پانی کی عدم فراہمی کے باعث شدید ذہنی و جسمانی اذیت کا شکار ہیں لیکن حکومت اور حکمران جماعتیں خاموش تماشائی بنی ہوئی ہیں۔ واٹر بورڈ کے عملے، افسران، وال مین اور ایکسین کی گرفت کر نے والا کوئی نہیں۔ صوبائی حکومت کے ذمہ داران بالخصوص وزیر بلدیات جو واٹر بورڈ کے نگراں بھی ہیں کراچی میں تعمیر وترقی اور عوام کو ریلیف دینے کی باتیں تو بہت کرتے ہیں مگر عملاً صورتحال انتہائی شرمناک اور افسوسناک ہے اور شہر کے اکثر علاقے پانی کی بوند بوند کو ترس رہے ہیں۔ میئر کراچی بھی نا اہلی اور ناقص کارکردگی کی تصویر بنے ہوئے ہیں۔ پی ٹی آئی اور ایم کیو ایم بھی پانی کے اس سنگین بحران میں خود کو بری الذمہ قرار نہیں دے سکتے کیونکہ وفاقی حکومت اور صوبائی حکومت کی ذمہ داری ہے کہ سخت گرمی کے موسم اور رمضان المبارک میں عوام کو پانی فراہم کریں۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ شہر میں پانی کو منصفانہ بنانے کے لیے اور واٹر بورڈ و ٹینکر مافیا کی ملی بھگت اور سرکاری سرپرستی ختم کیے بغیر پانی کا مسئلہ حل نہیں ہو سکتا کیونکہ والومین اور ان کی سرپرست من پسند علاقوں اور جہاں بعض رہائشی سوسائٹیزہیں، ٹینکر مافیا کو تو پانی دیتے ہیں لیکن عام شہریوں اور بیشتر علاقوں کو پانی سے محروم رکھتے ہیں۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ رمضان المبارک کا آخری عشرہ شروع ہو گیا ہے۔ شہر کی مساجد میں بڑی تعداد میں لوگ اعتکاف میں بھی بیٹھ گئے ہیں۔ جمعۃ الوداع بھی آنے والا ہے اور عید الفطر بھی قریب ہے لیکن افسوس کہ حکومت اور متعلقہ اداروں کی نا اہلی و مجرمانہ غفلت و لاپرواہی نے عوام کوپانی کے بحران اور عذاب میں مبتلا کیا ہوا۔روزے دار،متعکفین اور عوام شہری پانی نہ ہونے کی وجہ سے سخت پریشان ہیں۔ حکومت اور واٹر بورڈ کی ذمہ داری ہے کہ شہریوں کو بلا تفریق پانی کی فراہمی یقینی بنائے اور عوام کو اس عذاب سے نجات دلائے۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر


loading...