حافظ قرآن مولوی نے اپنی ہی 9 سالہ بھتیجی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، اور پھر عدالت میں جج سے ایسی بات کہہ کر معافی مانگی کہ ہر کسی کو غصہ آگیا

حافظ قرآن مولوی نے اپنی ہی 9 سالہ بھتیجی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، اور ...
حافظ قرآن مولوی نے اپنی ہی 9 سالہ بھتیجی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، اور پھر عدالت میں جج سے ایسی بات کہہ کر معافی مانگی کہ ہر کسی کو غصہ آگیا

  



لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) ننھی زینب کے بہیمانہ قتل نے پورے ملک کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔ اب لاہور میں اس سے بھی بھیانک واردات ہو گئی ہے کہ سن کر ہی آدمی کا خون کھول اٹھے۔ ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق لاہور میں ایک 9سالہ بچی کو اس کے سگے چچا نے اپنے دوستوں کے ساتھ مل کر جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے کے بعد بہیمانہ طریقے سے قتل کرڈالا ہے۔ اس سفاک شخص کا نام تمجید ہے جو حافظ قرآن ہے اور بچوں کو کتاب پاک کی تعلیم دیتا ہے۔

ملزم کے خلاف مقدمہ لاہور ہائیکورٹ میں زیرسماعت ہے جہاں اس نے ایسی مضحکہ خیز دلیل پر عدالت سے معافی کی درخواست کی کہ عدالت میں موجود ہر شخص کو غصہ آ گیا۔ اس درندہ صفت انسان نے عدالت سے کہا کہ ”میں نے اللہ سے معافی مانگ لی ہے، چنانچہ عدالت بھی مجھے معاف کر دے۔“اس سفاک شخص کی واردات نے ملک میں ہر شخص کو سوچنے پر مجبور کر دیا ہے کہ جب ایسے قریبی رشتہ داروں کے ہاتھوں میں بھی بچے محفوظ نہ رہیں تو پھر والدین اپنے بچوں کو ایسے سفاک درندوں سے کیسے بچائیں؟

مزید : علاقائی /پنجاب /لاہور


loading...