مکینزی بیزوس نے طلاق کے بعد اپنے سابق شوہر سے حاصل ہونے والے37 ارب ڈالر کا نصف خیرات میں دینے کا اعلان کردیا

مکینزی بیزوس نے طلاق کے بعد اپنے سابق شوہر سے حاصل ہونے والے37 ارب ڈالر کا نصف ...
مکینزی بیزوس نے طلاق کے بعد اپنے سابق شوہر سے حاصل ہونے والے37 ارب ڈالر کا نصف خیرات میں دینے کا اعلان کردیا

  



واشنگٹن (ڈیلی پاکستان آن لائن) دنیا کے امیر ترین شخص جیف بیزوس کی سابق اہلیہ مکینزی بیزوس نے طلاق سے حاصل ہونے والی رقم کا نصف خیرات میں دینے کا اعلان کردیا۔

ایمازون کے بانی اور دنیا کے امیر ترین شخص جیف بیزوس کی رواں برس اپریل میں اپنی اہلیہ مکینزی بیزوس سے علیحدگی ہوئی تھی ۔ طلاق کیلئے کیے جانے والے معاہدے میں مکینزی کے حصے میں ایمازون کے 4 فیصد شیئرز آئے جن کی مالیت طلاق کے وقت 35 اور اب 37 ارب ڈالر کے قریب بنتی ہے۔ منگل کے روز مکینزی بیزوس نے اعلان کیا ہے کہ وہ اپنی دولت کا نصف خیراتی کاموں کیلئے وقف کردیں گی۔

کچھ سال قبل دنیا کے دوسرے اور تیسرے امیر ترین افراد بل گیٹس اور وارن بفٹ نے ’گِونگ پلیج‘ نامی ایک فنڈ قائم کیا تھا ۔ اس فنڈ کا مقصد دنیا کے امیر ترین افراد کو خیراتی کاموں کی طرف مائل کرنا تھا۔ مکینزی بیزوس نے گونگ پلیج کو لکھے گئے ایک خط میں اپنی نصف دولت عطیہ کرنے کا اعلان کیا ہے۔

بل گیٹس اور وارن بفٹ کے فنڈ میں اب تک 23 ممالک کے 204 ارب پتی افراد اپنی دولت کا بڑا حصہ جمع کرانے کا اعلان کرچکے ہیں۔ 2010 میں ابتدائی طور پر نیو یارک کے سابق میئر مائیکل بلوم برگ، سی این این کے بانی ٹیڈ ٹرنر اور انٹرٹینمنٹ ایگزیکٹو بیری ڈلر نے گونگ پلیج کے معاہدے پر دستخط کیے تھے۔ 2015 میں فیس بک کے بانی مارک زکر برگ اور ان کی اہلیہ نے اپنے 99 فیصد اثاثے خیرات میں دینے کا اعلان کیا تھا۔ دنیا کے امیر ترین شخص جیف بیزوس اب تک اس خیراتی کام کا حصہ نہیں بنے ہیں تاہم انہوں نے گزشتہ برس بے گھر افراد کی مدد کیلئے 2 ارب ڈالر کا فنڈ قائم کیا تھا جس پر انہیں کڑی تنقید کا سامنا کرنا پڑا تھا، ان پر الزام ہے کہ وہ اپنے ملازمین کو انتہائی کم تنخواہیں دیتے ہیں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...