ٹی 20 ورلڈکپ کے مستقبل پر فیصلے کیلئے منعقدہ آئی سی سی کا اجلاس نئے تنازعہ کا شکار ہو گیا، رکن ممالک نے کس بات پر ناراضی کا اظہار کیا اور کس چیز پر تحقیقات کا فیصلہ کیا گیا ہے؟ شائقین کیلئے بڑی خبر آ گئی

ٹی 20 ورلڈکپ کے مستقبل پر فیصلے کیلئے منعقدہ آئی سی سی کا اجلاس نئے تنازعہ کا ...
ٹی 20 ورلڈکپ کے مستقبل پر فیصلے کیلئے منعقدہ آئی سی سی کا اجلاس نئے تنازعہ کا شکار ہو گیا، رکن ممالک نے کس بات پر ناراضی کا اظہار کیا اور کس چیز پر تحقیقات کا فیصلہ کیا گیا ہے؟ شائقین کیلئے بڑی خبر آ گئی

  

دبئی (ڈیلی پاکستان آن لائن) ورلڈ ٹی 20 کے مستقبل پر فیصلے کیلئے ہونے والا انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی)کا بورڈ اجلاس نئے تنازعہ کا شکار ہوگیا جس کے بعد غیر روایتی انداز میں اجلاس کے تمام ایجنڈے مؤخر کردئیے گئے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق آئی سی سی کے چیئر مین ششانک منوہر کی سربراہی میں منعقدہ اجلاس میں میں ٹی 20 ورلڈ کپ کے مستقبل کے بارے میں کوئی فیصلہ نہ ہو سکا بلکہ آئی سی سی بورڈ میں رازداری کی خلاف ورزی پر رکن ممالک نے ناراضی کا اظہار کیا جس کے بعد اس معاملے کی تحقیقات شروع کردی گئیں۔ ٹی 20 ورلڈ کپ رواں سال اکتوبر میں آسٹریلیا میں کھیلا جانا ہے لیکن کورونا وائرس کی وجہ سے ایونٹ کے انعقاد پر خدشات ظاہر کئے جارہے ہیں۔

اس سلسلے میں آئی سی سی کی اہم ٹیلی کانفرنس بھی نہ صرف بے نتیجہ ثابت ہوئی بلکہ ایک نیا تنازع بھی پیدا ہو گیا جس پر غیر روایتی انداز میں آئی سی سی اجلاس کا تمام ایجنڈا مؤخر کردیا گیا ،آئی سی سی بورڈ میٹنگ میں اجلاسوں میں ہونے والی گفتگو کی رازداری کی خلاف ورزی پر بوررڈ ممبران نارض ہوگئے جس کے بعد معاملے کی تحقیقات شروع کرنے کا فیصلہ کرلیا گیا ہے۔

کئی بورڈ اراکین نے اس مسئلہ پر اپنے خدشات کا اظہار کیا تو ٹی 20 ورلڈ کپ سمیت دیگر معاملات پر بحث 10 جون تک ملتوی کردی گئی ہے۔اجلاس میں بورڈ ز نے آئی سی سی مینجمنٹ کو کورونا وائرس کی بدلتی صورتحال سے نمٹنے کیلئے متبادل آپشنز کی تلاش جاری رکھنے کی درخواست کی ہے۔

مزید :

کھیل -