کام کرنے کی عادت اپنائیں

کام کرنے کی عادت اپنائیں
کام کرنے کی عادت اپنائیں

  

مصنف:ڈاکٹر ڈیوڈ جوزف شیوارڈز

قسط:80

تمام شعبوں میں رہنمائی کرنے والے لوگ اس بات پر متفق ہیں کہ پیشہ وارانہ تعلیم رکھنے کے باوجود اعلیٰ تخیل رکھنے والے لوگوں کی بہت کمی ہے جبکہ ایک اعلیٰ افسر کا کہنا ہے کہ لوگ تعلیم یافتہ تو ہیں لیکن ان کی تعلیم میں اکثر کامیابی کا عنصر نہیں ہے۔ یہ عنصر اہلیت ہے کہ کام کرو اور نتائج حاصل کرو۔

ہر بڑی ذمہ داری، جیسے کاروبار چلانا، سائنس، فوج یا پھر گورنمنٹ کو چلانا، ایسی ذمہ داریاں ہیں کہ ان کیلئے ایسے افراد کی ضرورت ہے، جو حالات کے مطابق فیصلہ لے کر فوری کارروائی کریں۔ بڑے اداروں کے سربراہ ایسے لوگوں کی ضرورت محسوس کرتے ہیں، جو ان سوالوں کے جواب دے سکیں کیا وہ یہ کام کریں گے؟ کیا وہ اپنے خیال کو عملی جامہ پہنائیں گے؟ کیا وہ خودبخود عمل کرنے کی استعداد رکھتے ہیں؟ کیا وہ نتائج حاصل کرنے پر یقین رکھتے ہیں یا صرف ان سے متعلق سوچتے ہی ہیں؟

ان تمام سوالوں کا ایک ہی مقصد ہے کہ کیا ایسا شخص باعمل ہے؟ بہت زیادہ آئیڈیاز کی نسبت صرف ایک آئیڈیا زیادہ بہتر ہے جس پر عمل کر کے نتائج حاصل کیے جائیں۔ایک کامیاب ترین بزنس مین جان وینا مارک اکثر کہا کرتا تھا: ”صرف سوچنے سے کچھ نہیں ہوتا“ ہم بہت کچھ سوچ سکتے ہیں۔ اصل سوچ وہی ہوتی ہے جس پر عمل کیا جائے۔

ہم لوگوں کو 2درجوں میں تقسیم کرتے ہیں، کامیاب لوگ اور عام لوگ۔ کامیاب لوگ متحرک ہوتے ہیں اور عام لوگ ان سے کم تر ہوتے ہیں اور یہ عام طور پر ناکام لوگ ہوتے ہیں ان کو ہم غیرمتحرک کہیں گے۔ہم نے ان دونوں درجوں کے لوگوں کے مطالعہ سے کامیابی کے لئے ایک اصول دریافت کیا ہے۔ ان میں مسٹر متحرک ہے جو ہر کام کرنے کو تیار رہتا ہے وہ جو آئیڈیا سوچتا ہے اس پرعمل کرتا ہے۔ دوسرا مسٹر غیرمتحرک ہے، وہ بہت سست ہے، کاموں کو ملتوی کرتا رہتا ہے۔

مسٹر متحرک اور مسٹر غیرمتحرک میں بے شمار اختلافات ہیں۔ مسٹر متحرک چھٹیوں کا منصوبہ بناتا ہے اور وہ چھٹیوں کو گزار بھی لیتا ہے۔ مسٹر غیرمتحرک بھی چھٹیوں کی منصوبہ بندی کرتا ہے،لیکن وہ ان کو اگلے سال تک ملتوی کرتا رہتا ہے۔ مسٹر متحرک ارادہ کرتا ہے کہ وہ باقاعدگی سے گرجا جائے گا او روہ باقاعدہ سے گرجا جاتا بھی ہے۔ مسٹر غیرمتحرک بھی گرجا جانے کی منصوبہ بندی کرتا ہے لیکن کبھی کبھاری ہی گرجا جا پاتا ہے۔ مسٹر متحرک کسی کو مبارکباد دینا چاہتا ہے اور اسے مبارک باد دے آتا ہے، لیکن مسٹر غیرمتحرک کو بھی ایسے ہی کسی کو مبارکباد دینا ہے لیکن وہ اس کیلئے وقت ہی نہیں نکال پاتا۔

ان دونوں میں بڑے بڑے کاموں میں بھی بہت اختلاف ہے۔ مسٹر متحرک بزنس کرنا چاہتا ہے اور وہ اپنا بزنس کر بھی لیتا ہے۔ مسٹر غیرمتحرک بھی بزنس کرنے کی خواہش رکھتاہے لیکن عین وقت پر اسے معلوم ہوتا ہے کہ ابھی یہ کام ٹھیک نہیں رہے گا۔ مسٹر متحرک کی عمر 40 سال ہے، وہ ایک نیا کام کرنا چاہتا ہے اور نیا کام شروع کر لیتا ہے۔ مستر غیرمتحرک بھی کچھ اسی طرح کا خیال رکھتا ہے لیکن وہ ایسا کبھی نہیں کر پاتا۔( جاری ہے ) 

نوٹ : یہ کتاب ” بُک ہوم “ نے شائع کی ہے ( جُملہ حقوق محفوظ ہیں )۔

مزید :

ادب وثقافت -