کائنات کی وسعت کے متعلق  بنیادی نظریہ غلط ثابت !

 کائنات کی وسعت کے متعلق  بنیادی نظریہ غلط ثابت !

  IOS Dailypakistan app Android Dailypakistan app


 ایک نئی تحقیق کے مطابق، ممکن ہے ہم کائنات کے کچھ گہرے حصوں کے متعلق بنیادی طور پر غلط ہوں۔کئی برسوں سے سائنسدان "ہبل ٹینشن" کی وجہ سے حیران ہیں۔ اس سے مراد کائنات کے پھیلاو¿ کی رفتار ماپنے میں دشواری ہے: مختلف پیمائشیں مختلف رفتار دکھاتی ہیں، اور سائنسدان یہ بتانے سے قاصر ہیں کہ ایسا کیوں ہے۔ ممکن ہے کہ یہ فرق رفتار کی پیمائش یا یہ ان پیمائشوں کے پیچھے موجود فزکس (طبیعات) کے ساتھ مسائل کا نتیجہ ہو۔اسی وقت سے سائنسدان ان مشکلات پر الجھن کا شکار ہیں اور یہ جاننے کی کوشش کر رہے ہیں کہ ایسا کیوں ہے۔
ایک نئی تحقیق سے خاص قسم کے ستارے کی اب تک کی سب سے درست پیمائش ملی ہے، جس وجہ سے ٹینشن مزید بڑھ گئی ہے، اس سے پتہ چلتا ہے کہ ہماری پیمائش درست ہے اور کائنات کی وسعت میں کچھ بڑا ہو رہا ہے۔سوئس فیڈرل انسٹیٹیوٹ آف ٹیکنالوجی لوزان سے تعلق رکھنے والے رچرڈ اینڈرسن نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ”اس تضاد کی اہمیت بہت زیادہ ہے“۔ فرض کریں کہ آپ پہاڑ کے دو مخالف اطراف میں کھدائی کرکے ایک سرنگ بنانا چاہتے ہیں۔ اگر آپ پتھر کی صحیح شناخت کرتے ہیں اور آپ کا حساب درست ہے تو، آپ جو دو سوراخ کر رہے ہیں وہ مرکز میں یکجا ہوں گے ’لیکن اگر ایسا نہیں ہوتا، تو اس کا مطلب ہے کہ آپ سے غلطی ہوئی ہے یا تو آپ کا حساب غلط ہے یا پھر پتھر کی قسم کے مطابق آپ کی معلومات غلط تھیں۔ ہبل کاسٹنٹ (کائنات کی وسعت کو بیان کرنے والی پیمائش کی اکائی) کے ساتھ بھی یہی ہو رہا ہے کیونکہ " ہمارا حساب درست ہونے کی جتنی زیادہ تصدیق ہوگی، ہم اتنا ہی اس نتیجے پر پہنچ سکیں گے کہ تضاد کا مطلب کائنات کے بارے میں ہماری سمجھ غلط ہے اور یہ کہ کائنات بالکل ویسی نہیں ہے جیسا ہم نے سوچا تھا۔
کائنات کی وسعت کے بارے میں ہماری سمجھ پر سوال اٹھانے کے ساتھ ساتھ دیگر فزکس جیسا کہ ڈارک انرجی اور کشش ثقل پر بھی اس کے اثرات مرتب ہوتے ہیں۔ رچرڈ اینڈرسن کا کہنا ہے : ” اس کا مطلب ہے کہ ہمیں ان بنیادی تصورات پر دوبارہ غور کرنا ہوگا جو فزکس کے متعلق ہماری مجموعی تفہیم کی بنیاد بناتے ہیں“۔ گزشتہ دنوں آسٹرانومی اینڈ آسٹروفزکس نامی بین الاقوامی جریدے میں ایک مقالہ شائع ہوا، جس میں اس تحقیق کے نتائج ” کھلے کلسٹروں اور سیفیڈز کے گایا ڈی آر 3 کے اعداد و شمار کی بنیاد پر گلیکٹک کیفیڈ چمک کے پیمانے کا 0.9 فیصد کیلیبریشن“ بیان کیے گئے تھے۔