گھناﺅنے کاروبار کیلئے فیسبک کے استعمال کا انکشاف

گھناﺅنے کاروبار کیلئے فیسبک کے استعمال کا انکشاف
گھناﺅنے کاروبار کیلئے فیسبک کے استعمال کا انکشاف

  

 لندن(نیوز ڈیسک) سماجی رابطے کی ویب سائیٹس صرف آپسی روابط کو بڑھا نے کا ذریعہ نہیں بلکہ انہیں گھناو¿نے جرائم کیلئے بھی استعمال کیا جارہا ہے۔ یورپی پولیس Europolکے سربراہ راب وینرائٹ نے انکشاف کیا ہے کہ انسانی سمگلر فیس بک کے ذریعے لڑکیوں اور نوجوان خواتین کو اپنے جال میں پھنسا کر جرائم اور جسم فروشی جیسے دھندوں کیلئے استعمال کر رہے ہیں۔

دنیا میں ایسے بے شمار گینگ کام کر رہے ہیں جو خواتین کو گھریلو ملازمت یا دیگر کاموں کا جھانسہ دے کر اپنے جال میں پھنساتے ہیں اور پھر انہیں اغواءکر کے غلام بنا لیتے ہیں ۔ یہ خواتین قحبہ خانوں یا جرائم پیشہ گروہوں کے ہاتھ بیچ دی جاتی ہیں جو ان سے اپنی مرضی کے مطابق غیر قانونی کام لیتے ہیں ۔

راب وینرائٹ نے بتایا کہ مجرم ان خواتین کو غلام بنانے کے لئے ویب کیمروںکے ذریعے ان کی نگرانی کرتے ہیں تاکہ ہمہ وقت ان سے حیا سوز کام کروائے جا سکیں۔ انہوں نے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے ساتھ ساتھ فیس بک جیسی ویب سائیٹوں کو استعمال کرنے والی خواتین پر بھی زور دیا ہے کہ وہ خبردار رہیں اور مکمل احتیاط سے کام لیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -