میڈی سینا اور میڈی سرچ انڈسٹری کے مالکان کو بلا جواز گرفتار کیاگیا

میڈی سینا اور میڈی سرچ انڈسٹری کے مالکان کو بلا جواز گرفتار کیاگیا

  

لاہور(پ ر ):وزیر اعلی پنجاب محکمہ صحت کو غیر قانونی اقدامات کرنے سے روکے کیونکہ میڈی سینا اور میڈی سرچ انڈسٹری کے مالکان کو بلا جواز گرفتار کر لیا گیا ہے۔ ان اقدامات سے پاکستان فارماسیوٹیکل انڈسٹری کے مالکان میں بے چینی کی فضا پیدا ہو گئی ہے۔یہ متفقہ فیصلہ پاکستان فارماسیوٹیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پی پی ایم اے) کے گزشتہ روز پی پی ایم اے ہاؤس میں ہونے والے اجلاس میں کیا گیا جس کی صدارت سینئر وائس چیئرمین محمد منصور دلاور نے کی جبکہ میاں اسد شجاع الرحمان ، خواجہ شاہ زیب اکرم ، اکبر علی بھٹی ، امجد علی جاوا، حامد رضا، عزیر ناگرہ، ندیم ظفر ،خالد منیر، ڈاکٹر ذوالفقار ملک، ڈاکٹر کھوکھر، شفیق عباسی، عدیل حیدر اور دیگر ممبران نے شرکت کی ۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے پاکستان فارماسیوٹیکل مینوفیکچررز ایسوسی ایشن (پی پی ایم اے) کے عہدیداران نے کہا کہ حکومت کو چاہیے کہ وہ فارما انڈسٹری کو حراساں کرنے کی بجائے اس کے فروغ کے لیے موثر اقدامات کرے ۔محکمہ صحت پنجاب کے غیر قانونی اقدامات اور ڈرگ ایکٹ کی خلاف ورزی کی بھرپور مذمت کی۔اجلاس میں یہ فیصلہ کیا گیا کہ اگر محکمہ صحت نے غیر قانونی اقدامات نہ روکے تو پوری فارما انڈسٹری احتجاجا بند کر دی جائے گی اور گورنمنٹ اداروں میں ادویات کی سپلائی بھی روک دی جائے گی۔

اگر انڈسٹری کی جانب سے کوئی میڈیسن غلط ثابت ہوتی ہے تو ہم سب حکومت کے ساتھ تعاون کرنے کیلئے تیار ہیں۔ مگر اس سے پہلے پوری چھان بین کی جائے ۔کسی بھی فارما انڈسٹری مالک کو غیر قانونی حراست میں لینا ہر گز درست قدم نہیں ہے۔ فارما سیوٹیکل پاکستان میں ٹیکسٹائل کے بعد سب سے بڑی صنعت ہے اور اس کی ایکسپورٹ بھی ٹیکسٹا ئل سے زیادہ ہے ۔گذشتہ تین سال کے دوران ایکسپورٹ گروتھ میں پہلے نمبر پر ہے۔اجلاس کے شرکاء نے وزیر اعلی پنجاب سے درخواست کی کہ وہ ملاقات کرنے کیلئے وقت دیں تاکہ انکو درست معلومات فراہم کی جائیں۔

مزید :

کامرس -