میوہسپتال کینٹین سے زائد المیعاد جوس پینے سے 4بچوں کی حالت غیر

میوہسپتال کینٹین سے زائد المیعاد جوس پینے سے 4بچوں کی حالت غیر

  

لاہور(جنرل رپورٹر) میوہسپتال کی ایمرجنسی کینٹین سے زائد المیعاد جوس پینے سے 4بچوں کی حالت خراب ہو گئی ہے اطلاع ملنے پر ایم ایس ڈاکٹر امجد شہزاد چودھری نے تحقیقاتی ٹیم تشکیل دے دی ٹیم کے سربراہ ایڈیشنل میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر سید علی حسن نے کینٹین سے میزان کمپنی کے زائد المعیاد جوس برآمد کر کے مقامی پولیس کو مقدمہ درج کرنے کے لئے کیس بھجوا دیا پولیس نے بیہوش ہونے والے بچوں کے والدین کی داد ریس کی بجائے کینٹین کے ٹھیکیدار شہزاد بٹ اور ملک شفیع سے صلح کے لئے بچوں کے والدین پر دباﺅ ڈالنا شروع کر دیا تاہم وہ جوس جن کے پیتے ہی بچے بیہوش ہو گئے وہ جوس میزان کمپنی کے تھے اور وہ 22روز قبل زائد المعیاد ہو چکے تھے ان کی ایکسپاری جوسوں پر درج تھی۔وہ 6نومبر2014ءتھی مگر اس تاریخ کے 22روز گزرنے کے باوجود ایمرجنسی کینٹین پر جوس فروخت کئے جا رہے تھے گزشتہ روز مریض افضل اقبال تارڑ حاجی شہزاد نے اپنے بچوں کو ریحان وغیرہ کو ڈاکٹرز کی ہدایت پر ایمرجنسی کے سامنے بٹ کینٹین سے میزان کمپنی کے جوس پلائے تو بچوں کے جوس پیتے ہی حالت غیر ہو گئی جس پر انہیں ہسپتال داخل کرایا گیا چھان بین کے بعد یہ بات سامنے آئی کہ جوس زائد المیعاد تھے جس کو لے کر بچوں کے والدین ایم ایس کے پاس پہنچ گئے ایم ایس نے فوری طور پر ایکشن لیتے ہوئے اے ایم ایس ایڈمن کو کارروائی کا حکم دے دیا اے ایم ایس نے بچوں کے والدین سے جوسوں کے خالی ڈبے حاصل کر کے مقامی پولیس کو کارروائی کے لئے خط لکھ دیا اس حوالے سے بچوں کے والدین حاجی شہزاد نے کہا کہ پولیس نے کیٹین والے کی حمایت کی معاملے کو وزیر اعلیٰ اور صارف کورٹ میں لے جائیں گے زائد المیعاد جوس جو میزان کمپنی کے تھے بیچنے کے خلاف مقدمہ درج کرائیں گے کمپنی منجیر کو بھی موقع پر طلب کیا گیا جس نے زائد المیعاد کے ڈبے چھیننے کی کوشش کی۔

زائدالمعیادجوس

مزید :

صفحہ آخر -