سپیکر ایاز صادق کےخلاف عذرداری کی تصدیق کرنےوالا اوتھ کمشنر جعلی نکلا

سپیکر ایاز صادق کےخلاف عذرداری کی تصدیق کرنےوالا اوتھ کمشنر جعلی نکلا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی)سپیکر قومی اسمبلی ایاز صادق کے خلاف تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی طرف سے دائر انتخابی عذرداری اوراس کے ساتھ پیش کئے گئے گواہوں کے تمام بیان حلفی تصدیق کرنے والا اوتھ کمشنر جعلی نکلا،معلوم ہوا ہے کہ اسلام پورہ پولیس نے رجسٹرار لاہور ہائی کورٹ اور صدر لاہور ہائی کورٹ بار کے سرٹیفکیٹس کی بنیاد پر جعلی اوتھ کمشنر انیس الدین کے خلاف دھوکہ دہی اور جعلی دستاویزات تیار کرکے عدالت میں پیش کرنے کے الزام میں مقدمہ بھی درج کرلیا ہے۔حلقہ این اے 122میں ایاز صادق سے شکست کھانے والے امیدوار اور تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی انتخابی عذرداری کے ساتھ 46گواہوں کے بیان حلفی الیکشن ٹربیونل میں پیش کئے گئے ہیں اس انتخابی عذرداری اور بیانات حلفی کی تصدیق انیس الدین نے اوتھ کمشنر کی حیثیت سے کررکھی ہے۔اس سلسلے میں رجسٹرار لاہور ہائی کورٹ سے انیس الدین کی بطور اوتھ کمشنر تعیناتی کے حوالے سے تصدیق کی درخواست کی گئی تو رجسٹرار لاہور ہائی کورٹ نے مراسلہ جاری کیا کہ انیس الدین نام کا کوئی وکیل اوتھ کمشنر نہیں ہے ،اسی طرح لاہور ہائی کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر شفقت محمود چوہان نے بھی لیٹر جاری کیا ہے کہ انیس الدین نام کا کوئی وکیل ہائی کورٹ بار کا ممبر نہیں ہے اس پر میاں نصیر ایڈووکیٹ نے انیس الدین کے خلاف اندراج مقدمہ کے لئے درخواست دائر کی جس پر کارروائی کرتے ہوئے تھانہ اسلام پورہ نے انیس الدین کے خلاف مقدمہ درج کرلیا ہے۔ایاز صادق کے وکیل بیرسٹر اسجد کا کہنا ہے کہ الیکشن ٹربیونل کے روبرو عمران خان کی انتخابی عذرداری تکنیکی طور پر غیرموثر ہوگئی ہے اور آئندہ تاریخ سماعت پر یہ معا ملہ ٹربیونل کے روبرو اٹھایا جائے گا۔

اوتھ کمشنر جعلی نکلا

مزید :

صفحہ آخر -