نواز مودی مصافحے نے سارک کانفرنس کو ’باعزت‘اختتام دیدیا،عالمی میڈیا

نواز مودی مصافحے نے سارک کانفرنس کو ’باعزت‘اختتام دیدیا،عالمی میڈیا

  

کھٹمنڈو(مانیٹرنگ ڈیسک) نیپال کے دارلحکومت کھٹمنڈو میں دو روز تک جاری رہنے والی 18 ویں سارک سربراہی کانفرنس پیش کئے جانے والے مجوزہ معاہدوں پر اختلاف کے سبب عالمی پذیرائی تو حاصل نہ کر سکی تاہم آخری لمحات کے دوران پاکستان اور بھارت کے وزراء اعظم کے درمیان ہو نے والے مصافحے نے اس کو ایک اچھا اختتام ضرور مہیا کر دیا۔ کانفرنس کے دوران پیش کئے جانے والے تین معاہدوں میں سے دو کو پاکستان کی جانب سے اعتراض لگائے جانے کے سبب منظور نہ کیا جا سکا لیکن اختتامی لمحات میں وزیر اعظم نواز شریف اوربھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے نہ صرف مسکراہٹوں کا تبادلہ کرتے ہوئے ہاتھ ملایا بلکہ سر گوشیاں بھی کیں تودوروز تک دونوں سربراہان مملکت کے درمیان ہونے والی کسی بھی غیر متوقع ملاقات کی تاک میں بیٹھے جنوبی ایشیائی اور عالمی میڈیا نے اس غیر رسمی مصافحے کو کو بھی غیر معمولی کوریج دی ہے۔ عالمی خبر رساں ایجنسی رائٹرز کا کہنا ہے کہ پاک بھارت وزراء اعظم نے آخر میں ہاتھ ملا کر کانفرنس کو ایک باعزت اختتام مہیا کر دیا۔امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے لکھا ہے کہ سارک کانفرنس کے آ خر میں نریندر مودی اور نواز شریف نے ہاتھ ملا کر لوگوں کو مثبت پیغام دیا ہے جس کو دنیابھر میں سراہا جا رہا ہے۔ نشریاتی ادارے آئی بی این نے ملاقات کے احوال میں کہا کہ بھارتی وزیر اعظم مودی اور نواز شریف کا مصافحہ ہی وہ واحد وجہ ہے جس کے سبب 18 ویں سارک سربراہی کانفرنس کو کامیاب قرار دیا جا سکتا ہے کیونکہ پاکستان کی طرف سے نظر ثانی کی درخواست کے بعد اہم معاہدوں پر تو دستخط ہی نہیں ہو سکے تھے۔خبر رساں ادارے ایسوسی ایٹڈ پریس کا کہنا ہے کہ کانفرنس کے دوران دونوں رہنماؤں کی ملاقات کا بے چینی سے انتظار کیا جاتا رہا مگر یہ ملاقات آخری لمحات ہی میں ممکن ہو سکی۔ بھارتی اخبار ٹائمز آف انڈیا نے پاک بھارت وزراء اعظم کی اس مختصر ملاقات کو کچھ یوں بیان کیا کہ’ بھارتی وزیر اعظم مودی نے وزیر اعظم نواز شریف سے آنکھیں چرانے کے ایک روز بعد ہی گرم جوش مصافحہ کرنے کے علاوہ مختصر بات چیت کی ہے‘۔

مزید :

صفحہ اول -