ینگ ڈاکٹرز نے سروس سٹریکچر پر عملدرآمد نہ ہونے پرہڑتال کی دھمکی دیدی

ینگ ڈاکٹرز نے سروس سٹریکچر پر عملدرآمد نہ ہونے پرہڑتال کی دھمکی دیدی

  

 لاہور(جاوید اقبال) ینگ ڈاکٹرز نے سروس سٹریکچر پر عملدرآمد نہ کرنے کے خلاف محکمہ صحت کے خلاف طبل جنگ بجا دیا ہے جس کی باقاعدہ طورپر ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن نے تیاریاں شروع کر دی ہیں پہلے مرحلے میں ہر ہسپتال کی مقامی تنظیم ینگ ڈاکٹرز سیمینار منعقد کرئے گی اور تحریک چلانے کا ڈاکٹروں سے مینڈیٹ حاصل کرے گی اور ہر تنظیم 6دسمبر کو جنرل کونسل کے اجلاس میں پیش کی جائیں گی اجلاس میں احتجاجی تحریک کا اعلان کیا جائے گا اور حکومت کو مطالبات پورے کرنے کی ڈیڈ لائن دی جائے گی اس کا آغاز گزشتہ روز وائی ڈی اے سروسز ہسپتال نیڈاکٹرز کنونشن منعقد کر کے دیا جس میں سروسز ہسپتال سمیت دیگر ہسپتالوں کے ینگ ڈاکٹرز نے شرکت کی کنونشن کے مہمان خصوصی وائی ڈی اے کے پیٹرن چیف ڈاکٹر حامد بٹ تھے جبکہ دیگر راہنماؤں ڈاکٹر بشارت گل ڈاکٹر تجمل بٹ، ڈاکٹر اجمل چودھری سمیت دیگر راہنماؤں نے شرکت کی، اس موقع پر وائی ڈی اے نے آئندہ دنوں میں محکمہ صحت کے خلاف بھرپور انداز میں تحریک چلانے کی نوید سنا دی تاہم وائی ڈی اے کے پیٹرن چیف ڈاکٹر حامد بٹ نے حکومت محکمہ صحت کی افسرشاہی اور وائی ڈی اے کی قیادت کو اڑے ہاتھوں لیا انہوں نے کہا کہ سروس سٹریکچر کے جن نکات پر عملدرآمد نہیں ہو رہا یہ حکومت کے ساتھ ساتھ وائی ڈی اے کی قیادت کی بھی غفلت کا نتیجہ ہے ذرائع نے بتایا ہے کہ گزشتہ کئی دو سالوں سے محکمہ صحت کی طرف سروس سٹریکچر پر نوٹیفیکیشن کے مطابق عمل درآمد نہیں کیا جس کے خلاف وائی ڈی اے نے ینگ ڈاکٹروں کو دوبارہ سڑکوں پر لانے کی تیاریاں شروع کر دی ہیں اور اس کے لئے یہ ہسپتال کی تنظیم کے زیر اہتمام ڈاکٹرز کنونشن منعقد کرنے کا سلسلہ شروع کر دیا ہے جس کا مقصد ڈاکٹروں کو متحرک کر کے احتجاجی تحریک کے لئے تیار کرنا ہے۔ اس حوالے سے کنونشن سے خطاب کرتے ہوئے ڈاکٹر حامد بٹ نے کہا کہ حکومت ہمارا امتحان نہ لے سروس سٹریکچر کے تمام نکات پر عملدرآمد کرائے پی جی اور ہاؤس آفیسرز کو وظائف دے تنخواہوں میں اضافہ کرے۔ وعدے اور نوٹیفیکیشن کے مطابق ڈاکٹرز کو ترقیاں دے 5ہزار ڈاکٹروں کو ان کے موجودہ گریڈ سے اگلے گریڈ میں ترقیاں دے انہوں نے کہا کہ ہر سپتال کی وائی ڈی ا ے کی تنظیم ڈاکٹروں کو جواب دے جو تنظیم ڈاکٹروں کے اعتماد پر پورا نہیں اترتی ان کی قیادت کرنے کا کوئی حق نہیں ہے دریں اثناء مرکزی راہنما ڈاکٹر عامر بندشہ نے ’’پاکستان‘ذ سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے جنرل کونسل کا اجلاس 6دسمبر کو طلب کر لیا ہے جو راولپنڈی میں ہو گا جنرل کونسل احتجاجی تحریک چلانے کی منظوری دے گی جس میں تحریک چلانے سے قبل محکمہ صحت اور پنجاب حکومت کو ڈیڈ لائن دی جائے گی اس ڈیڈ لائن کے اندر مطالبات پورے نہ ہوئے تو ڈاکٹرز اپنی تاریخ دھرائیں گے ہڑتال کریں گے دھرنے دینگے اور سڑکوں پر بھی آئیں گے۔

مزید :

صفحہ اول -