لاہور ہائیکورٹ ، مہمان پرندوں کا شکار روکنے کیلئے عرب شخصیات کے 62 لائسنس معطل

لاہور ہائیکورٹ ، مہمان پرندوں کا شکار روکنے کیلئے عرب شخصیات کے 62 لائسنس ...

  

                                     لاہور(نامہ نگار خصوصی) لاہور ہائیکورٹ نے عرب شخصیات کو مہمان پرندوں کے شکار کے لئے جاری کئے گئے 29نئے لائسنس بھی معطل کرتے ہوئے ان کے خلاف حکم امتناعی جاری کردیا گیا جبکہ گزشتہ سال جاری کئے گئے 33لائسنسوں کے خلاف حکم امتناعی میں بھی 10دسمبر تک توسیع کردی ہے۔ جسٹس شمس محمود مرزا نے کلیم الیاس ایڈووکیٹ کی طرف سے دائر درخواست پر سماعت کی، درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ وزارت خارجہ نے سائبیریا سمیت دیگر ملکوں سے پاکستان آنے والے پرندوں کے شکار کے لئے عرب شخصیات کو گزشتہ برس 33لائسنس جاری کئے تھے جس پر ہائیکورٹ نے حکم امتناعی جاری کیا تھا ، عدالتی حکم امتناعی کے باوجود وزارت خارجہ نے مزید 29لائسنس جاری کردیئے ہیں ۔انہوں نے بتایا کہ پاکستان میں مہمان پرندوں کا شکار عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے لہذا مہمان پرندوں کا شکار روکنے کا حکم دیا جائے، پنجاب حکومت کی طرف سے ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل نے وفاقی حکومت کی مخالف کرتے ہوئے لائسنسوں کو غیرقانونی قرار دیدیا، پنجاب حکومت کی طرف سے جمع کرائے گئے جواب کے مطابق مہمان پرندوں کا شکار عالمی قوانین کی خلاف ورزی ہے ، پنجاب حکومت کا لائسنسوں کے اجراءسے کوئی تعلق نہیں، یہ وزارت خارجہ کا کام ہے، وزارت خارجہ کے وکیل نے کہا کہ اس معاملے پر موثر جواب داخل کرانے کے لئے وزارت قانون سے تعاون طلب کیا گیا ہے اور اس سلسلے میں جواب تیار کرکے وزارت قانون کو بھجوایا گیا ہے ۔جس پر فاضل عدالت نے اب تک جاری کئے گئے تمام (62)لائسنس معطل کرتے ہوئے مزید سماعت 10دسمبر تک ملتوی کر دی۔

62لائسنس معطل

مزید :

صفحہ آخر -