پنجاب میں سرمایہ کاری کے بے پناہ مواقع موجود ہیں، شہباز شریف

پنجاب میں سرمایہ کاری کے بے پناہ مواقع موجود ہیں، شہباز شریف

  

لاہور(جنرل رپورٹر) وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف سے یہاں یورپی یونین کے سفیر لارس گنر وگیمارک ، جرمنی کے سفیر ڈاکٹر سیرل نن اور ہالینڈ کے سفیر مارسل ڈی ونک نے ملاقات کی، جسمیں باہمی دلچسپی کے امور، دو طرفہ معاشی و تجارتی تعلقات ، سکل ڈویلپمنٹ اور دیگر شعبوں میں تعاون مزید بڑھانے پر تبادلہ خیال کیا گیا۔ ملاقات میں اس امر پر اتفاق کیا گیا کہ یورپی یونین اور پنجاب حکومت معاشی و تجارتی تعلقات کے ساتھ ان شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دیں گے ۔وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف نے یورپی یونین، جرمنی اور ہالینڈ کے سفیروں سے بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان کو جی ایس پی پلس کا درجہ دلانے میں یورپی ممالک کی حمایت کے شکرگزار ہیں۔ یورپی منڈیوں تک رسائی ملنے سے ٹیکسٹائل مصنوعات کی برآمد ات میں اضافہ ہو رہا ہے جبکہ روزگار کے نئے مواقع بھی پیدا ہوئے ہیں۔انہوں نے کہا کہیورپی یونین ، جرمنی اور ہالینڈ کی جانب سے پنجاب میں فنی، ووکیشنل اور سکل ڈویلپمنٹ کے شعبے میں تعاون خوش آئند ہے۔یورپی یونین اوراس کے ممبر ممالک کے ساتھ تجارتی و معاشی تعلقات کے ساتھ دیگر شعبوں میں تعاون کو مزید فروغ دینا چاہتے ہیں۔ پاکستان خصوصاً پنجاب میں ٹیکسٹائل، توانائی ، لائیوسٹاک زراعت اور سکل ڈویلپمنٹ کے شعبوں میں سرمایہ کاری کے بے پناہ مواقع موجود ہیں۔ پنجاب حکومت برطانیہ کے بین الاقوامی ترقی کے ادارے(DFID) کے تعاون سے سکل ڈویلپمنٹ کے جامع پروگرام پر کامیابی سے عملدرآمد کر رہی ہے۔جنوبی پنجاب سے شروع کئے جانے والے اس پروگرام کے ذریعے ہزاروں نوجوانوں کو ہنرمند بنایا گیا ہے اورسکل ڈویلپمنٹ پروگرام کا دائرہ کار پنجاب کے 18 اضلاع تک بڑھا دیا گیا ہے۔ وزیراعلیٰ نے پنجاب میں خواتین، اقلیتوں اور نوجوانوں کیلئے شروع کئے جانے والے فلاحی پروگراموں کا ذکر کرتے ہوئے بتایا کہ صوبے میں نوجوانوں کو خود روزگار سکیم کے تحت آسان شرائط پر قرضے فراہم کرکے انہیں بااختیار بنایا جا رہا ہے تاکہ نہ صرف وہ اپنے پاؤں پر کھڑے ہوسکیں بلکہ اپنے خاندان کی کفالت بھی کرسکیں۔ معاشرے کے کم وسیلہ طلباو طالبات کیلئے پسماندہ علاقوں میں دانش سکولز قائم کئے گئے ہیں جہاں انہیں بہترین تعلیمی سہولتیں مہیا کی گئی ہیں۔ دانش سکولز میں سمارٹ بورڈ اور آئی ٹی لیبز کے ذریعے ان بے آسرا بچوں کو جدید علوم سے روشناس کرایا جا رہا ہے۔ پنجاب ایجوکیشن فاؤنڈیشن کے ذریعے15لاکھ سے زائد بچوں کو تعلیمی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کی بدولت 60 ہزار سے زائد ہونہار طلبا و طالبات اپنا تعلیمی سفر جاری رکھے ہوئے ہیں۔ انہو ں نے کہا کہ توانائی بحران سے نمٹنے کیلئے تیز رفتاری سے سنجیدہ اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں کیونکہ اس کے باعث صنعت، زراعت اور دیگر شعبے متاثر ہو رہے ہیں۔وفاقی حکومت گیس کی کمی دور کرنے کیلئے ایل این جی درآمد کر رہی ہے جس سے گیس کی قلت پر قابو پانے میں مدد ملے گی اور امید ہے کہ ایل این جی اگلے برس کے آغاز میں دستیاب ہوگی۔ انہوں نے کہا کہ چین کے تعاون سے کوئلے سے چلنے والے بجلی کے کارخانوں پر بھی کام جاری ہے اور ان منصوبوں پر انتہائی شفاف انداز میں تیز رفتاری سے آگے بڑھا جا رہا ہے۔ انہو ں نے کہا کہ پاکستان میں بسنے والے تمام شہری برابر کے حقوق کے مالک ہیں اور صوبے میں قانون کی عملداری کو یقینی بنایا گیا ہے۔ یورپی یونین کے سفیر نے اس موقع پر بات چیت کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان خصوصاً پنجاب کے ساتھ فنی اور ووکیشنل ٹریننگ کے حوالے سے تعاون مزید بڑھانے کے سنجیدہ اقدامات اٹھا رہے ہیں اور اس ضمن میں تعاون کے فروغ سے نہ صرف روزگار کے نئے مواقع پیدا ہوں گے بلکہ بہترین ہنرمند فورس بھی مارکیٹ کی ضروریات کو پورا کرسکے گی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کی ٹیکسٹائل انڈسٹری کیلئے یورپی منڈیوں میں وسیع مواقع موجود ہیں۔ بلاشبہ وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کی متحرک قیادت میں پنجاب میں بہترین کام ہو رہا ہے۔ جرمنی کے سفیر نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب میں نوجوانوں کو ہنرمند بنانے کے حوالے سے تعاون جاری رکھیں گے۔ ہالینڈ کے سفیر نے کہا کہ پنجاب حکومت کے ساتھ تعاون کو فروغ دینے کے علاوہ ٹیکنالوجی بھی شیئر کریں گے۔وزیراعلیٰ پنجاب نے یورپی یونین، جرمنی اور ہالینڈ کے سفیروں کے اعزاز میں ظہرانہ بھی دیا۔صوبائی وزراء مجتبیٰ شجاع الرحمن، راجہ اشفاق سرور، خلیل طاہر سندھو، چیئرمین منصوبہ بندی و ترقیات، سیکرٹری صنعت اور متعلقہ حکام بھی اس موقع پر موجود تھے۔ وزیراعلیٰ پنجاب محمدشہبازشریف سے یہاں ونسینٹ پلمیڈ کی قیادت میں عالمی بینک کے مشن نے ملاقات کی۔ملاقات میں پنجاب حکومت اور عالمی بینک کے مابین ادارہ جاتی اصلاحات،اربن ڈویلپمنٹ،ایگری بزنس،سکل ڈویلپمنٹ ،انفارمیشن ٹیکنالوجی،قدرتی آفات سے نمٹنے،لائیوسٹاک و ڈیری ڈویلپمنٹ،چھوٹی صنعتوں کے فروغ اوردیگر شعبوں میں تعاون کیلئے تیزرفتاری سے اقدامات کرنے پر اتفاق ہوا۔ اس مقصد کیلئے عالمی بینک کے نمائندوں اور پنجاب حکومت کے حکام پر مشتمل مشترکہ سٹےئرنگ کمیٹی کا قیام عمل میں لایا گیااور یہ مشترکہ سٹےئرنگ کمیٹی پنجاب حکومت اورعالمی بینک کے مابین مختلف شعبوں میں تعاون کے اقدامات کی مانیٹرنگ کرے گی۔وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہاکہ صوبے میں پائیدار معاشی ترقی کیلئے جامع اصلاحات متعارف کرائی جارہی ہیں۔ادارہ جاتی اصلاحات اوردیگر شعبوں کی استعداد کاربڑھانے کیلئے عالمی بینک کے ماہرین کے تعاون کا خیر مقدم کرتے ہیں۔ادارہ جاتی اصلاحات ،اقتصادی ترقی میں اضافے،فنی تعلیم کے فروغ اوردیگر شعبوں میں بہتری لانے کیلئے عالمی بینک کی ٹیم کے ساتھ ملکر کام کریں گے اوران کے تجربات اورمہارت سے فائدہ اٹھائیں گے۔انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت صوبے میں تیزرفتار معاشی ترقی کیلئے جامع پروگرام پر عمل پیرا ہے اور آئندہ چاربرسوں کیلئے مقررکردہ8فیصد شرح نمو کے حصول کیلئے تیزرفتاری سے آگے بڑھ رہے ہیں ۔معاشی ترقی کے اہداف کے حصول کیلئے جدید ٹیکنالوجی سے بھر پور استفادہ کیا جارہا ہے اورصوبے میں انفارمیشن ٹیکنالوجی کے ذریعے ای گورنمنٹ کے قیام کی جانب تیزی سے بڑھ رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ نوجوان ہمارا قیمتی اثاثہ ہیں،جنہیں ہنر مند بنا کرقومی معیشت کو مضبوط کیا جاسکتا ہے ۔نوجوان سکل ڈویلپمنٹ کے ذریعے ملک کی تعمیروترقی میں اہم کردارادا کرسکتے ہیں ۔صنعتی اورمارکیٹ کی ضروریات کے مطابق نوجوانوں کو مختلف فنون کی تربیت دی جارہی ہے۔انہوں نے کہا کہ نوجوانوں کو ہنر مند بنا کرروزگار کی فراہمی ایک چیلنج ہے جسے موقعے میں بدل رہے ہیں ۔ٹیوٹا اور وکیشنل ایجوکیشنل ٹریننگ کے اداروں کی تنظیم نو اوراستعداد کاربڑھانے کی ضرورت ہے ۔نوجوانوں کومختلف ہنر سیکھانے کیلئے عمارتوں اوراساتذہ کے حصول پر وقت ضائع کرنے کی بجائے کمپنیوں کی خدمات حاصل کر کے ہنر مند افرادی قوت تیزی سے تیار کی جاسکتی ہے۔انہوں نے کہا کہ صوبے میں اکنامک گروتھ میں اضافے کیلئے جدید ٹیکنالوجی کو استعمال کیا جارہاہے ۔انہوں نے کہا کہ ٹیکس وصولی کے نظام کو جدید خطوط پر استوار کیا جارہا ہے۔ ٹیکس وصولی کے نظام کو آٹو میشن کیا جارہا ہے ۔انہوں نے کہاکہ پائیدار معاشی ترقی سے روزگار کے نئے مواقع پیدا کیے جاسکتے ہیں اورمعیشت کو مضبوط کیا جا سکتا ہے ۔پنجاب حکومت نے سالانہ10لاکھ نوجوانوں کو روزگار کی فراہمی کا ہدف مقررکیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ شفافیت اور میرٹ پنجاب حکومت کا طرہ امتیاز ہے۔صوبے میں سادگی اورکرپشن فری کلچر کو فروغ دیا گیا ہے ۔ تمام ترقیاتی منصوبے نہایت شفاف طریقے سے برق رفتاری سے مکمل کیے جارہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وسائل پر پہلا حق عوام کا ہے اورصوبے کے تمام وسائل عوام کی فلاح پر ہی صرف کیے جارہے ہیں ۔کرپٹ اہلکاروں عوام کی خدمت سے پہلوتہی برتنے اورفرائض میں غفلت کا مظاہرہ کرنیوالوں کی صوبے میں کوئی گنجائش نہیں ۔انہوں نے کہاکہ پنجاب میں سرمایہ کاری کے فروغ کیلئے بھی ٹھوس اورموثر اقدامات کیے گئے ہیں ۔بیرونی سرمایہ کاروں کو ہر ممکن سہولتیں فراہم کی جارہی ہیں۔ سربراہ عالمی بینک مشنونسینٹ پلمیڈنے کہاکہعالمی بینک پنجاب حکومت کے ساتھ ملکراصلاحاتی پروگرام کو تیزرفتاری سے آگے بڑھائے گا۔وزیراعلیٰ شہبازشریف کی قیادت میں صوبے کی ترقی کیلئے پنجاب حکومت کے اقدامات لائق تحسین ہیں۔صوبائی وزراء مجتبیٰ شجاع الرحمان،چوہدری شیر علی خان،فرخ جاوید،ایم پی اے ڈاکٹر عائشہ غوث پاشا،چیف سیکرٹری، چےئرمین منصوبہ بندی و ترقیات،متعلقہ محکموں کے سیکرٹریزاورترقیاتی اداروں کے سربراہان بھی اس موقع پر موجود تھے ۔

مزید :

صفحہ اول -