عمران خان جاہل اور جعلساز ،وہ آج پھر روئے، ان کے الزامات مسترد کرتے ہیں: سعد رفیق

عمران خان جاہل اور جعلساز ،وہ آج پھر روئے، ان کے الزامات مسترد کرتے ہیں: سعد ...
عمران خان جاہل اور جعلساز ،وہ آج پھر روئے، ان کے الزامات مسترد کرتے ہیں: سعد رفیق

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا ہے کہ عمران خان کی دماغی حالت انوکھے لاڈلے کی سی ہے ، وہ ہر وقت روتے رہتے ہیں اور آج بھی روئے ہیں ،انہوں نے زائد بیلٹ پیپرز چھاپنے کا الزام عائد کیا ہے مگر وہ ہمیں کوئی بھی الیکشن بناتیں جس میں اضافی بیلٹ پیپرز نہیں چھاپے گئے، ہم ان کے مضحکہ خیز الزامات مسترد کرتے ہیں ، حقیقت تو یہ ہے کہ عمران خان خود ایک جاہل اور جعلساز آدمی ہیں جنہوں نے اپنی پارٹی میں بھی جعلی انتخابات کروائے۔ پریس کانفرنس سے خطاب میں انہوں نے کہا کہ اگر عام انتخابات میں دھاندلی ہو رہی تھی اور تحریک انصاف کو اس کا پتہ بھی چل رہا تھا تو دوران پولنگ انہوں نے اس کا شور کیوں نہیں مچایا؟ اور تحریک انصاف کی طرف کسی بھی حلقے میں اس معاملے پر کوئی ایک بھی تحریری شکایت کیوں درج نہیں کروائی گئی۔ وفاقی وزیر نے سوال کیا کہ تحریک انصاف والے ہمارے ووٹوں میں اضافے کی بات کرتے ہیں تو ہمیں یہ بھی بتائیں کہ ان کو یک دم 34 نشستیں کیسے حاصل ہو گئیں۔ ان کا کہنا تھا کہ بغیر ثبوت الزامات عائد کرنا عمران خان کا پرانا وتیرہ ہے، آج بھی انہوں نے پریس کانفرنس میں الزامات لگائے مگر کوئی ثبوت نہیں دیئے اور کہا کہ ہم صرف ڈیٹا ہی میڈیا کو پیش کریں گے، ثبوت اپنے پاس ہی رکھیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ تحقیقات کرنے والے جج کاظم ملک پر عمران خان نے کچھ روز پہلے ہی اعتماد کا اظہار کیا ہے، انہیں چاہئے کہ وہ ان کے لکھے ہوئے فیصؒے بھی پڑھ لیں، کاظم ملک نے فیصلے میں لکھا ہے کہ تحریک انصاف این اے 125 میں دھاندلی کے معاملے پر اپنی مرضی کا فیصلہ لینا چاہتے تھی اور ان کے وکلاءکی جانب ان کی تضحیک کی گئی ۔ کل این اے 122 میں بھی الیکشن ٹربیونل کے سامنے جس اوتھ کمشنر سے تصدیق شدہ حلف نامے جمع کروائے گئے وہ جعلی تھا، اس کا مطلب تو یہ ہے کہ دوسروں پر جعل سازی کے الزام لگانے والے عمران خان کود ایک جعل ساز ہیں۔ وزیر ریلوے نے عمران خان کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ عام انتخابات میں تحریک انصاف نے الیکشن کمیشن سمیت تمام اداروں پر اعتماد کا اظہار کیامگر آ ج رونا رو رہے ہیں، انہیں چاہئے کہ وہ کوئی قانون بھی پڑھ لیں تا کہ ان کی جاہلیت کم ہو سکے، مسلم لیگ ن تو کسی طرح بھی انتخابی عمل کی ذمہ دار ہی نہیں تھی۔

سعد رفیق نے تحریک انصاف کے انٹرا پارٹی الیکشن میں دھاندلی کے الزامات بھی عائد کئے اور کہا کہ عام انتخابات میں تحریک انصاف نے پارٹی ٹکٹ بھی بیچے ، تحریک انصاف کے اپنے لوگ اس کے خلاف شور مچا رہے ہیں۔ان کا کہنا تھا کہ عمران خان نواز شریف کی تقریر سے متعلق کہتے ہیں کہ اس سے پہلے جہانگیر ترین جیت رہے تھے لیکن وہ یہ نہیں بتاتے وہاں جیتنے والا تو آزاد امیدوار تھا ، مسلم لیگ ن کا امیدوار تو وہیں جہانگیر ترین سے بھی پیچھے تھا۔

مزید :

قومی -اہم خبریں -