سعودی عرب میں غیر ملکیوں پر ایک اور مصیبت ٹوٹ پڑی

سعودی عرب میں غیر ملکیوں پر ایک اور مصیبت ٹوٹ پڑی
سعودی عرب میں غیر ملکیوں پر ایک اور مصیبت ٹوٹ پڑی

  

ریاض (مانیٹرنگ ڈیسک) سعودی عرب میں مقامی افرادی قوت کو ترجیح دینے کا پراجیکٹ زور و شور سے جاری ہے اور اسی مہم کے تحت پرائیویٹ سیکٹر میں غیر ملکی انجینئروں کیلئے مراعات اور بونس میں کمی کا فیصلہ کیا گیا ہے جس کے نتیجے میں متعدد غیر ملکی انجینئروں نے ملازمت چھوڑنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

سعودی حکومت کا پاکستانیوں کے لیے زبر دست اقدا م،اب جیل نہیں جانا پڑے گا

سعودی کونسل آف انجینئرز کے چیئرمین حماد الشگاوی کا کہنا ہے کہ غیر ملکی انجینئروں کی تنخواہ 20000 ریال سے کم نہیں ہے جبکہ اس کے برعکس سعودی انجینئروں کی زیادہ سے زیادہ تنخواہ 10000 ریال ہے۔ عرب میڈیا  کے  مطابق ایک حالیہ میٹنگ میں سعودی کونسل آف انجینئرز اور متعدد کمپنیوں کی مشترکہ میٹنگ میں اس فیصلے پر مبنی دستاویز تیار کی گئی۔ مراعات اور بونس کی کمی کے پیش نظر بڑی تعداد میں غیر ملکی انجینئرز کے استعفوں کا امکان ہے۔

مزید :

بین الاقوامی -