ایڈمن افسروں کی تعیناتی سے تھانہ کلچر تبدیلی کی جانب گامزن ہے،کیپٹن امین وینس

ایڈمن افسروں کی تعیناتی سے تھانہ کلچر تبدیلی کی جانب گامزن ہے،کیپٹن امین ...

لاہور (پ ر)سی سی پی او لاہور کیپٹن (ر) محمد امین وینس نے کہا ہے کہ ایڈمن افسروں کی تھانوں میں تعیناتی کے پراجیکٹ کے آغاز سے تھانوں میں آنے والے شہریوں کے ساتھ بدسلوکی اور سخت رویے کی شکایات نہ ہونے کے برابر رہ گئی ہیں جبکہ گزشتہ تین ماہ کے دوران شہریوں کی جانب سے شہر کے مختلف تھانوں میں دی گئی10723درخواستوں میں سے 96فیصد شکایتوں پر شہریوں کے مسائل حل کرتے ہوئے ان درخواستوں کو داخل دفتر کیا جانا اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ تھانہ کلچر تبدیلی کی جانب گامزن ہے۔انہوں نے کہا کہ لاکھ تنقید کے باوجود بھی آج بھی کسی شہری کو کوئی پریشانی یامشکل کا سامنا ہوتا ہے تو وہ سب سے پہلے 15پر کال کرتا ہے جو اس بات کا واضح ثبوت ہے کہ عوام آج بھی پولیس پر اعتماد کرتے ہیں اور اس اعتماد کے بعد ایڈمن افسروں پر دہری ذمہ داری عائد ہوتی ہے کہ وہ تھانے میں آنے والے پریشان حال شہریوں کی نہ صرف دلجوئی کریں بلکہ ان کا مسئلہ حل کروانے کے لیے اس طرح جدو جہد کریں جس طرح یہ ان کا اپنا ذاتی مسئلہ ہو۔ایڈمن افسر گلبرگ محمد علی، ایڈمن افسر لوئر مال انجم رشید، ایڈمن افسر ڈیفنس ذوالفقار کو ایک عمر رسیدہ خاتون سمیت مختلف شہریوں سے خوش اخلاقی سے پیش آتے ہوئے ان کے مسائل کو ذاتی دلچسپی لے کر حل کروانے پر پانچ پانچ ہزار روپے نقد انعام کا اعلان کرتے ہوئے سی سی پی او نے کہا کہ لوگ خلق خدا کی خدمت کرنے کے لیے لوگ این جی اوز اور مختلف فلاحی ادارے بناتے ہیں لیکن اللہ نے آپ کو محکمہ پولیس کی شکل میں ایسا فورم دیا ہے جس میں فرائض سر انجام دیتے ہوئے نہ صرف باعزت روزی کما سکتے ہیں بلکہ دنیا آخرت دونوں میں سرخرو ہو سکتے ہیں لہذا آپ سب لوگوں کو عام آدمی کی خدمت کے لیے دل و جان اور نیک نیتی سے فرائض سر انجام دینے چاہیے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے الحمراء کلچرل کمپلیکس قذاتی اسٹیڈیم میں ایڈمن افسروں کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لیے ہفتہ وار اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر ڈی سی او لاہور کیپٹن (ر) محمد عثمان، ایس ایس پی سی انویسٹی گیشن حسن مشتاق سکھیرا، ایس ایس پی سی آئی اے محمد عمر ورک، ایس پی آپریشن وانویسٹی گیشن ماڈل ٹاؤن مستنصر فیروز اور فیصل مختار بھی موجود تھے۔اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے ڈی سی او نے کہا کہ تھانوں میں جس طرح ایڈمن افسر کام کر رہے ہیں وہ یقیناًقابل تعریف ہے۔ انہوں نے کہا کہ میرے کچھ قریبی دوستوں کو گزشتہ چند ماہ کے دوران اپنے ذاتی مسائل کے سلسلہ میں لاہور کے کچھ تھانوں میں جانا پڑا اور ان تھانوں کے ایڈمن افسروں کے بارے میں ان کی جو رائے تھی وہ اس بات کی غمازی کر رہی تھی کہ تھانہ کلچر واقعی تبدیلی کی طرف چل پڑا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لاہور میں امن و امان کی صورتحال ملک بھر میں مثالی ہے یہی وجہ ہے کہ ملک کے دوسرے صوبوں اور شہروں سے لوگ ہجرت کر کے لاہور میں آ کر گھر بنانا پسند کرتے ہیں ۔ ایس ایس پی انویسٹی گیشن حسن مشتاق سکھیرا نے اس موقع پر کہا کہ ایڈمن افسر کسی بھی تھانے میں اگر کسی مقدمے میں یہ سمجھیں کہ تفتیش میرٹ پر نہیں ہو رہی تو اس حوالے سے مجھے فوری ایس ایم ایس کریں تا کہ انصاف کے تقاضوں کو پورا کرنے کے لیے ہر ممکن اقدامات کیے جائیں۔ ایس ایس پی سی آئی اے محمد عمر ورک نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ تھانوں میں ایڈمن افسروں کی تعیناتی کا مقصد عام شہری کے مسائل کا حل اور تھانے میں اپنے مسائل کے حل کے لیے آنے والے شہریوں سے عزت و اخلاق سے پیش آنا ہے۔

مزید : علاقائی