موجودہ بلدیاتی نظام سے عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوگا،ارشدخان

موجودہ بلدیاتی نظام سے عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوگا،ارشدخان

پشاور(پاکستان نیوز)سابق ممبر صوبائی اسمبلی و جماعت اسلامی کے رہنما ارشد خان نے کہا کہ موجودہ بلدیاتی نظام سے عوام کی مشکلات میں اضافہ ہوگا انہوں نے کہا کہ 2013 کا بلدیاتی اور موجودہ مسودہ میں بہت فرق ہے، انہوں نے کہا کہ صوبہ میں جمہوریت کی باتیں کرنے والوں نے بلدیاتی اداروں میں جس قسم کی ترمیم کرکے بلدیاتی نظام قائم کیا ہے اس سے لوگوں کو کوئی بھی فائدہ نہیں ہوگا بلکہ اس سے فائدہ صرف بیوروکریٹس کو ہی حاصل ہوگا، انہوں نے کہا کہ اگر حکومت نے بلدیاتی نظام پر نظرثانی نہیں کی تو ان کی جماعت اس کیخلاف منتخب نمائندوں کے ساتھ تحریک میں شامل ہوگی، انہوں نے کہا کہ حکومت نے وعدہ کیا تھا کہ اختیارات کو نچلی سطح پر منتقل کرینگے اور ترقیاتی کام زیادہ تر بلدیاتی نمائندوں ہی کے زیر نگرانی کئے جائینگے جبکہ یہ سب کتابی باتیں ثابت ہوئیں اور اختیارات تمام تر صوبائی حکومت اور بیوروکریٹس کے پاس ہیں جبکہ ڈسٹرکٹ ناظم اور ٹاؤن ناظم صرف نام ہی کے ہیں انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں وہ اپنی پارٹی کی پالیسی کی حمایت کرینگے اور ہماری پارٹی کا واضح موقف ہے کہ اختیارات کو بلدیاتی نمائندوں کے ساتھ ہی رہنے دیا جائے اور جو نظام2013 کا نافذ کیاگیا تھا اس کو فی الفور نافذ کیا جائے انہوں نے کہا کہ وہ تحریک انصاف کے فیصلوں پرحیران ہے کہ انہوں نے قومی وطن پارٹی کو جس الزامات کی بنیاد پر حکومت سے الگ کردیا تھا کیا وہ الزامات غلط تھے یا ان کو ایک بار پھر قومی وطن پارٹی کی ضرورت پڑی اور انہوں نے گزشتہ تمام الزامات پس پشت ڈال کر ان کو اپنے ساتھ شامل کردیا ان کے اس فیصلے سے تحریک انصاف کے کارکنوں میں مایوسی پائی جاتی ہے لیکن کسی مصلحت کی وجہ سے خاموش ہیں، انہوں نے کہا کہ جماعت اسلامی کے تمام وزراء گزشتہ اور موجودہ کیخلاف کسی بھی قسم کا کرپشن کا کوئی کیس نہیں کیونکہ ان کو جو اختیارات یا ذمہ داری دی گئی ہے انہوں نے ان کوایمانداری اور دیانتدار سے ادا کیا ہے یہی وجہ ہے کہ پورے ملک میں تمام ادارے ان کو عزت کی نگاہ سے دیکھتے ہیں، انہوں نے کہا کہ اس دفعہ جنرل الیکشن میں جماعت اسلامی کی حکومت پورے صوبے میں قائم ہوگی کیونکہ جماعت اسلامی کے مرکزی امیر سراج الحق کی قیادت میں جماعت پر لوگوں کا اعتماد روز بروز بڑ ھ رہا ہے اور لوگ جوق درجوق جماعت میں شمولیت اختیار کررہے ہیں جماعت اسلامی واحد جماعت ہے جس میں جمہوریت کا وجود زندہ ہے اور کارکنان کی مشاورت سے امراء اور دیگر عہدوں کا انتخاب شفاف طریقے سے کیا جاتا ہے، انہوں نے کہا کہ موجودہ جمہوریت پسند پارٹیوں میں جمہوریت کا نام و نشان نہیں بلکہ سب باپ دادا کی پارٹیوں کی رکوالی کررہے ہیں اور کسی بھی پارٹی ورکر کو پارٹی کی سربراہی میں دے سکتے ہیں اور نہ دے رہے ہیں کیونکہ ان کو خطرہ ہے کہ وہ ان کی میراث کو ان سے چھین لیں گے اسی وجہ سے وہ پارٹیوں پر قابض ہیں ۔

مزید : راولپنڈی صفحہ آخر