نوشہرہ،وفاقی وزیراکرم درانی پردھماکہ بزدلانہ فعل ہے،جمعیت

نوشہرہ،وفاقی وزیراکرم درانی پردھماکہ بزدلانہ فعل ہے،جمعیت

نوشہرہ(بیورورپورٹ) جمعیت علماء اسلام نوشہرہ نے جمعیت علماء اسلام کے مرکزی رہنما اور وفاقی وزیرہاؤسنگ اکرم خان درانی کے قافلے پر بم حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ جمعیت علماء اسلام کے رہنماؤں اور کارکنوں کے حوصلے ایسی حرکتوں سے پست نہیں ہوں گے اکرم خان درانی پر قاتلانہ حملہ صوبائی حکومت کی غفلت اور امن وامان کے قیام میں ناکامی کا نتیجہ ہے ان خیالات کااظہار جمعیت علماء اسلام نوشہرہ کے ضلعی امیر مفتی محمد سجاد، ضلعی جنرل سیکرٹری مفتی نعیم جان حقانی، حاجی محمد یوسف خان نے نوشہرہ پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا اس موقع پر نعمان، فضل اکبر باچا، مفتی شوکت اﷲ خٹک، ولیداختر، پیرباچا، ضلعی کونسلر میاں ظہورکاکاخیل،جمعیت طلباء اسلام کے رشیداحمد اور عنایت علی شاہ بھی موجود تھے انہوں نے کہا کہ موجودہ صوبائی حکومت کا صوبے میں مثالی قیام امن کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے ہر طرف بدامنی ہے کسی کی جان ومال محفوظ نہیں صوبائی حکومت امن وامان کی برقراریت میں بری طرح ناکام ہوچکی ہے اس لئے صوبائی حکومت فوری طورپر مستعفی ہوجائے انہوں نے اکرم خان درانی پر بم حملے کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا کہ اگر صوبائی حکومت وفاقی وزیر جیسے شخصیت کو تحفظ فراہم نہیں کرسکتی تو اس سے ثابت ہوتا ہے کہ پورے صوبے میں امن وامان کا بیڑا غرق ہے انہوں نے مزید کہا کہ جمعیت علماء اسلام ضلع نوشہرہ کے زیراہتمام 3دسمبر کو شیخ الحدیث ڈاکٹر مولانا شیرعلی شاہ کی یاد میں تعزیتی کانفرنس منعقد کی جائے گی جس کی تمام تیاریوں کیلئے پانچوں صوبائی حلقوں کی سطح پر کمیٹیاں تشکیل دے دی گئی ہے تعزیتی کانفرنس میں ڈاکٹر مولانا شیرعلی شاہ کی زندگی پر روشنی ڈالی جائے گی اور اسی کانفرنس میں جمعیت علماء اسلام کے قائد مولانا فضل الرحمن حصوصی خطاب کریں گے۔

مزید : کراچی صفحہ آخر