نئی نسل کو فاسٹ فوڈ کے نقصانات بارے آگاہ کرنا ہوگا، غیاث النبی طیب

نئی نسل کو فاسٹ فوڈ کے نقصانات بارے آگاہ کرنا ہوگا، غیاث النبی طیب

لاہور(خبر نگار)پرنسپل پوسٹ گریجوایٹ میڈیکل انسٹی ٹیوٹ و امیر الدین میڈیکل کالج پروفیسر ڈاکٹر غیاث النبی طیب نے کہا ہے کہ نئی نسل کو ذیابیطس سمیت دیگر بیماریوں سے محفوظ رکھنے کے لئے فاسٹ فوڈ کے نقصانات اور جسمانی سرگرمیوں کے فوائد سمیت تما م احتیاطی تدابیرکے بارے میں آگاہ کرنا ہو گا ۔ اس مقصد کے حصول کیلئے حکومت کے ساتھ ساتھ سول سوسائٹی ، میڈیا، علماء کرام اور طب سے وابستہ افرادانسداد ڈینگی مہم کی طرز پر آگاہی مہم میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیں اور’’پرہیز علاج سے بہتر ‘‘ کے نعرہ کو مقبول بنانے میں اپنا کردار ادا کریں۔ گزشتہ روز لاہور جنرل ہسپتال میں ذیابیطس کے حوالے سے منعقدہ کلینیکل سیمپوزیم سے خطاب کرتے ہوئے پروفیسر غیاث النبی طیب نے کہا کہ شوگر کے مرض میں مبتلا افراد سہ ماہی بنیادوں پر اپنے معالج سے رابطہ رکھیں تا کہ پیچیدگیوں سے بچ سکیں اور ٹینشن فری زندگی بسر کریں۔ انہوں نے نوجوان ڈاکٹروں پر زور دیا کہ وہ ریسرچ کو اپنا اوڑھنا بچھونا بنا لیں تا کہ وہ دور حاضر کے تقاضوں کے مطابق مریضوں کا بہتر سے بہتر علاج کر سکیں ۔ تقریب کی مہمان خصوصی پروفیسر منیزہ ہاشمی اور ایم ایس ایل جی ایچ ڈاکٹر غلام صابر نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ شوگر کے مریضوں کی بڑھتی ہوئی شرح کے پیش نظر عوام میں آگاہی و شعو ر کی بیداری لازمی ہے انہوں نے مطالبہ کیا کہ اس مرض کے بارے مضمون نصاب میں شامل کیا جائے تا کہ نوجوانوں ، بچوں اور خواتین کو اس بیماری سے ہونے والی پیچیدگیوں کا بروقت علم ہو سکے ۔ انہوں نے کہا کہ شوگر سرکے بالوں سے لیکر پاؤں کے ناخنوں تک جسم کے ہر حصے پر اثر انداز ہوتی ہے ۔ اس کی وجہ خون کے اندر گلوکوز(شوگر)، کلسٹرول اور دیگر چربی کے بڑھ جانے سے خون کی باریک نالیاں متاثر ہونا شروع ہو جاتی ہیں جس سے جسم کے دیگرحصوں کے علاوہ فالج، ہارٹ اٹیک،گردے اوربینائی چلے جانے کے خطرات بڑھ جاتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ایل جی ایچ میڈیکل یونٹ ون نے اس سلسلے میں تمام شعبوں سے ملکر اس مرض پر کنٹرول اور عوامی آگاہی کا جو بیڑا اٹھایا ہے اس کے مفید اثرات مرتب ہوں گے ۔

مزید : میٹروپولیٹن 1