سابق عسکری قیادت کا جنرل قمرباجوہ اور زبیر حیات کی تعیناتی کا خیر مقدم

سابق عسکری قیادت کا جنرل قمرباجوہ اور زبیر حیات کی تعیناتی کا خیر مقدم

کوئٹہ(اے این این)سابق عسکری قیادت نے جنرل قمرجاوید باجوہ اور جنرل زبیر حیات کی تعیناتی کے فیصلے کا خیر مقدم کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ وہ دہشت گردی کیخلاف جنگ کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے ،دونوں جنرل اپنی صلاحیتوں کو استعمال کر کے پاکستان کی حرب و ضرب کی صلاحیت میں خاطر خواہ اضافہ کریں گے کیونکہ بھارت کی جانب سے مسلسل دہشت گردی نے اسکی ضرورت کو اجاگر کر دیا ہے۔ تفصیلات کے مطابق ویٹرنز آف پاکستان (سابق پیسا) کا ایک اجلاس اول نائب صدر ایڈمرل احمد تسنیم کی سربراہی میں ہوا جس میں جنرل نعیم اکبر، ائیر مارشل مسعود اختر، برگیڈئیر میاں محمود، سابق سفیر سلیم نواز گنڈاپور، برگیڈئیر سائمن شرف، برگیڈئیر مسعود الحسن ، کرنل شاہدرحمان اور دیگر نے شرکت کی۔ اجلاس میں آرمی چیف اور جائنٹ چیف آف سٹاف کمیٹی کے چئیرمین کی پیشہ ورانہ قابلیت پر بھرپور اعتماد کا اظہار کیا گیا اور سابق سپہ سالار جنرل راحیل شریف کی خدمات کو زبردست خراج تحسین پیش کیا گیا جن کے دور میں فوج کی ساکھ اور پیسہ ورانہ استعداد میں بہت اضافہ ہوا اور انھوں نے انتہائی مشکل حالات میں قیادت کے فرض کو احسن طریقہ سے نبھایا۔ امید ہے کہ ریٹائرمنٹ کے بعد جنرل راحیل اور جنرل راشد محمود اپنی صلاحیتیں سابق فوجیوں کی فلاح کیلئے بہتر انداز میں استعمال کریں گے۔ سابق فوجیوں نے کہا کہ مغربی ممالک بھارت میں کسی بھی دہشت گردی کے واقعے کے بعد بغیر کسی آزادانہ تحقیقات اور ثبوت کے پاکستان کی خلاف توپوں کے دہانے کھول دیتے ہیں جبکہ بھارت کی جانب سے انسانی حقوق کی مسلسل پامالی اور لائن آف کنٹرول پر اشتعال انگیزی کو وہی مغربی ممالک مسلسل نظر انداز کر رہے ہیں جو دہرا معیار ہے اور پاکستان کو بات چیت کے زریعے مسائل حل کرنے کا کہا جاتا ہے۔ انھوں نے حکومت کی جانب سے روس اور وسط ایشیائی ریاستوں کو گرم پانیوں تک رسائی دینے کی فیصلے کو سراہتے ہوئے کہا کہ اس سے خطے کی معیشت ، سیاست اور سیکورٹی پر مثبت اثرات مرتب ہونگے ۔

مزید : صفحہ آخر