فیڈریشن چیمبر کی وزارت تجارت سے ڈی جی ٹی او آفس کے خلاف تحقیقات کا مطالبہ

فیڈریشن چیمبر کی وزارت تجارت سے ڈی جی ٹی او آفس کے خلاف تحقیقات کا مطالبہ

پشاور (سٹاف رپورٹر) فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈانڈسٹری کے نائب صدر محمد ریاض خٹک نے وزارت تجارت سے مطالبہ کر دیا کہ ڈائریکٹر جنرل ٹریڈارگنائزیشن کے خلاف نے نئے بنائے گئے چیمبرز کے بارے میں تحقیقات کا آغاز کرے اور یہ پتہ لگائے کہ کن کن جگہوں پر بے ضابتگیاں کی گئیں ہیں۔انھوں نے کہا کہ پچھلے پانچ مہینوں میں ڈی جی ٹی او آفس نے اتنے چیمبرز کے لائسنس دیے ہیں جو کہ پچھلے پانچ سالوں میں نہیں دئیے گئے ۔ہمیں خوشی ہے کہ اس ملک میں نئے چیمبرز آفس کامرس کے قیام کا مختلف اضلاع میں آغاز ہو رہا ہے لیکن قوائد و ضوابط پر نہ عمل کر کے ان نئے چیمبرزکو لائسنس دینا ایک تشویش ناک عمل ہے ۔ میں نے بحیثیت نائب صد ر ایف پی سی سی آئی ڈی جی ٹی او اظہراقبال کوایک تحریری خط بھی لکھا جن میں ان نئے چیمبرز آف کامرس کی قیام کی شفافیت کے معاملے کو اٹھایا اور ساتھ ہی ساتھ یہ مسلہ بھی اٹھایا کہ ٹریڈایکٹ کے تحت ہر چیمبرزکا صدر ایک سال منتخب ہونے کے بعد جب دوسری مدت کے لئے آتاہے تو ایک سال کا وقفہ ضروری ہے ۔لیکن بہت سے چیمبرزآف کامرس کے صدور مسلسل تیسری دفع اس عہدے پر برجمان ہیں جس کی تائید ڈائریکٹر جنرل ٹریڈارگنائزیشن آفس نے کی ہوئی ہے جو کہ ایک خلاف قانون عمل ہے ۔ محمد ریاض خٹک نے مزید کہا کہ وزیر اعظم نوازشریف اور وزیر تجارت ہمیشہ بزنس کمیونٹی کے مسائل کو حل کرنے میں سنجیدگی دکھائی اور بزنس کمیونٹی کے مسائل کو اپنا مسلہ سمجھا جس پر ہم ان کے مشکور ہیں لیکن کچھ عناصر حکومت کی شفافیت کو داغدار کر رہے ہیں جو کہ لمحہ فکریہ ہے ۔انھوں نے وفاقی حکومت سے اپیل کی کے جن چیمبرز آف کامرس کو اس سال لائسنس ملے ہیں ان کی ایک جامع تحقیقات کرے اور اس کے ساتھ ساتھ ان چیمبرز کے ممبران کا ٹریڈایکٹ کے مطابق ازسرنوع جائزہ لیا جائے تاکہ جن قوانین کی خلاف ورزی کی گئی ان کو مد نظر رکھتے ہوئے ان چیمبرز کے لائسنس کو فلفور منسوخ کیا جائے تاکہ اس ملک کی بزنس کمیونٹی میں غلط روایات کا خا تمہ ہو سکے ۔

مزید : پشاورصفحہ آخر