این ایف سی کے فیصلوں کو وفاق بھی تبدیل نہیں کر سکتا، آئینی طورپر کسی صوبے کے حصے میں کمی نہیں کی جا سکتی : اسحاق ڈار

این ایف سی کے فیصلوں کو وفاق بھی تبدیل نہیں کر سکتا، آئینی طورپر کسی صوبے کے ...
این ایف سی کے فیصلوں کو وفاق بھی تبدیل نہیں کر سکتا، آئینی طورپر کسی صوبے کے حصے میں کمی نہیں کی جا سکتی : اسحاق ڈار

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ این ایف سی کے فیصلوں کو وفاق بھی تبدیل نہیں کر سکتا کیونکہ آئین میں لکھاہے کہ این ایف سی میں جوفائنل ہوگیاوہ حتمی ہوگاتاہم کمیشن کے چیئرمین کے طور پر میرا کردار نیوٹرل ہے اورمیرا کام تمام فریقین کوساتھ لےکرچلنا ہے ۔

اسلام آباد میں جاری این ایف سی اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انکا کہنا تھا کہ آئینی طورپرکسی صوبے کے حصے میں کمی نہیں کی جاسکتی ۔خیبر پختونخواہ کوبرابری اور مساوی حق دیاجائےگا۔ آج کے اجلاس میں این ایف سی کی دوسری رپورٹ کا جائزہ لیا گیاتاہم این ایف سی پر آئندہ اجلاس دسمبر کے تیسرے ہفتے میں ہوگا اور قومی مالیاتی کمیشن کے فیصلوں سے جلدآگاہ کریں گے۔

نئے آرمی چیف کو حالات ۔۔۔خورشید شاہ نے ایسی بات کہہ دی جسے سن کر آپکو بھی بے حد حیر ت ہو گی 

انہوں نے کہا کہ حتمی رپورٹ کی تیاری کے لیے 10 دسمبرتک کا وقت دیا گیا ہے،غازی بروتھا کا کلیم بھی زیر بحث آیا،آج کا اجلاس مفید اورحوصلہ افزا رہا اور آج کے اجلاس میں این ایف سی کی دوسری رپورٹ کا جائزہ لیا گیا۔

اسحاق ڈار کا مزید کہنا تھا کہ این ایف سی کے حوالے سے4نئے گروپس بننے تھے اور گروپس کی رپورٹس آنےوالے سالوں کےلئے بہت مفیدہوگی ۔گروپس نے رپورٹس کےلئے10دسمبرتک کی مہلت مانگی ہےتاہم آج این ایف سی کے نئے ایوارڈکے حوالے سے بات ہوئی۔

مزید : قومی