اسرائیلی فوج پر اب تک کا سب سے بڑا حملہ، کس نے کیا اور پھر کیا ہوا؟ ایسی خبر آگئی جس کی دنیا میں کسی مسلمان کو توقع نہ تھی

اسرائیلی فوج پر اب تک کا سب سے بڑا حملہ، کس نے کیا اور پھر کیا ہوا؟ ایسی خبر ...
اسرائیلی فوج پر اب تک کا سب سے بڑا حملہ، کس نے کیا اور پھر کیا ہوا؟ ایسی خبر آگئی جس کی دنیا میں کسی مسلمان کو توقع نہ تھی

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) شام و عراق میں برسرپیکار تنظیم داعش بھی اب تک دیگر شدت پسند تنظیموں کی طرح اسلام کے نام پر مسلمانوں پر ہی قہر ڈھا رہی تھی لیکن اب پہلی بار اس نے ایک ایسے ملک پر حملہ کر دیا ہے کہ جس کی کسی کو بھی توقع نہ تھی، یہ ملک اسرائیل ہے۔ میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق پیر کو داعش کے شدت پسندوں نے پہلی بار اسرائیل پر حملہ کر دیا۔ انہوں نے گولان کی پہاڑیوں میں مشین گن اور مارٹر گولوں سے اسرائیلی فوج کو نشانہ بنایا تاہم اسرائیلی فوج کے مطابق ان کے اہلکار محفوظ رہے اور اسرائیلی فضائی حملے نے داعش کے 4شدت پسندوں کو بھسم کر دیا۔

ایٹمی جنگ کا خطرہ شدید ترین! بڑے ایشیائی ملک نے اپنے شہریوں کو ایٹمی حملے سے بچنے کی تربیت شروع کروادی، یہ کام کیوں کرنا پڑرہا ہے؟ جان کر پاکستانی بھی بے حد پریشان ہوجائیں گے

رپورٹ کے مطابق اسرائیلی فوج پر حملہ کرنے والے شدت پسندوں کا تعلق بنیادی طور پر شہداءالیرموک گروپ سے تھا جو داعش سے منسلک ہے۔ اسرائیلی فوج کے ترجمان لیفٹیننٹ کرنل پیٹر لرنر کا کہنا تھا کہ ”شدت پسندوں نے فوج کے جن جوانوں پر فائرنگ کی اور مارٹر گولے پھینکے ان کا تعلق گولانی بریگیڈ سے تھا۔“شام کی جنگ 2011ءمیں شروع ہو ئی تھی۔ تب سے گاہے بگاہے غلطی سے مارٹرگولے اسرائیلی حدود میں آتے رہے ہیں تاہم یہ پہلی بار شدت پسندوں نے منصوبہ بندی کے تحت اسرائیلی فوج کو نشانہ بنایا ہے۔

ایک ریٹائرڈ اسرائیلی جنرل نتزان نوریل کا کہنا تھا کہ ”اسرائیلی فوج پر اسرائیل کی حدود میں براہِ راست حملہ پہلی بار ہوا ہے۔ میں حیران ہوں کہ اس حملے کے پیچھے ان کا کیا مقصد کارفرما تھا۔ وہ بخوبی جانتے تھے کہ حملہ کرنے کی صورت میں اسرائیل کا ردعمل کیا ہو گا۔ شام کی جنگ کے اس مرحلے پر اسرائیل کا سامنا وہ آخری چیز ہے جس کی داعش کو ضرورت ہے۔مجھے شبہ ہے کہ اسرائیل پر حملہ داعش کے مقامی کمانڈروں کی ایماءپر ہوا۔ اس حملے کو داعش کے سربراہ ابوبکر البغدادی کے حکم پر ان کی پالیسی میں تبدیلی قرار نہیں دیا جا سکتا۔“

مزید : بین الاقوامی