امریکہ کے انتخابی نظام کی دھجیاں اُڑگئیں، دوبارہ گنتی کے حکم کے باوجود وہ کام ہوگیا جو پاکستانی سیاستدان بھی نہیں کرتے

امریکہ کے انتخابی نظام کی دھجیاں اُڑگئیں، دوبارہ گنتی کے حکم کے باوجود وہ ...
امریکہ کے انتخابی نظام کی دھجیاں اُڑگئیں، دوبارہ گنتی کے حکم کے باوجود وہ کام ہوگیا جو پاکستانی سیاستدان بھی نہیں کرتے

  

واشنگٹن (نیوز ڈیسک) نومنتخب امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ عام انتخابات سے پہلے دھاندلی کے خدشات ظاہر کرتے رہے لیکن جب وہ جیت گئے تو انتخابات کو صاف شفاف قرار دے ڈالا۔ دوسری جانب ان کے مخالفین نے دھاندلی کے ثبوت ڈھونڈ نکالے، جس کی بناءپر ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا مطالبہ کردیا گیا۔ جونہی دوبارہ گنتی کا فیصلہ سامنے آیا تو ڈونلڈ ٹرمپ کو پھر سے دھاندلی یاد آ گئی اور اب انہوں نے الزام عائد کردیا ہے کہ سارا میڈیا بھی ان کے مخالفین سے ملاہوا ہے اور ان کے ساتھ ہونے والی دھاندلی کو نظر انداز کرکے الٹا انہیں ہی مجرم قرار دے رہا ہے۔

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ریاست وسکانسن میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا فیصلہ ہونے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ شدید مشتعل ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ وہ مقبول ووٹنگ میں بھی ہیلری کلنٹن سے کہیں آگے ہوتے اگر ان کے خلاف لاکھوں جعلی ووٹ نہ ڈالے جاتے اور میڈیا اس دھاندلی کو نظر انداز نہ کرتا۔ انہوںنے اپنی ایک ٹویٹ میں کہا کہ ریاست ورجینیا، کیلیفورنیا اور نیو ہیمپشائر میں بڑے پیمانے پر جعلی ووٹ ڈالے گئے۔ انہوں نے اپنے ساتھ ہونے والی مبینہ زیادتی کا شکوہ کرتے ہوئے کہا کہ میڈیا کو یہ دھاندلی کیوں نظر نہیں آئی اور جو لاکھوں غیر قانونی ووٹ ان کے خلاف ڈالے گئے ان کی بات کیوں نہیں کی جارہی۔

’وہ پچاس مسلمان لڑکیوں کو کمرے میں لے گئے اور پھر باری باری انہیں۔۔۔‘ ایسی شرمناک ترین خبر آگئی کہ جان کر کوئی بھی مسلمان رات کو سو نہ سکے

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کو الیکٹورل کالج کے ووٹوں میں سبقت حاصل رہی لیکن اس کے برعکس مقبول ووٹ کے میدان میں ہیلری کلنٹن ان سے تقریباً 22 لاکھ زیادہ ووٹ لے گئیں۔ گرین پارٹی کی امیدوار جل سٹین نے موقف اختیار کیا تھا کہ الیکشن میں جعلی ووٹ ڈال کر ہیلری کلنٹن کو ہرایا گیا۔ انہوں نے ریاست وسکانسن، پنسلوانیا اور مشی گن میں ووٹوں کی دوبارہ گنتی کا مطالبہ کیا تھا۔ ان کے مطالبے کو تسلیم کرتے ہوئے ریاست وسکانسن میں دوبارہ گنتی کا فیصلہ کیا گیا ہے، جس پر ڈونلڈ ٹرمپ شدید پریشان اور برہم ہیں۔ الیکشن جیتنے پر ان کا یہ ضرور کہنا تھا کہ دھاندلی نہیں ہوئی لیکن دوبارہ گنتی کی بات سامنے آتے ہی انہوں نے دوبارہ دھاندلی کا شور مچا دیا ہے۔

مزید : بین الاقوامی