’میں اپنی 2 بیٹیوں سمیت کینیڈا سے بھاگ کر داعش میں شمولیت کے لئے شام پہنچی لیکن یہاں آتے ہی یہ دیکھ کر زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا کہ۔۔۔‘ داعش کی قید سے فرار ہونے والی مغربی خاتون نے ایسا انکشاف کردیا کہ ہر کوئی حیران پریشان رہ گیا

’میں اپنی 2 بیٹیوں سمیت کینیڈا سے بھاگ کر داعش میں شمولیت کے لئے شام پہنچی ...
’میں اپنی 2 بیٹیوں سمیت کینیڈا سے بھاگ کر داعش میں شمولیت کے لئے شام پہنچی لیکن یہاں آتے ہی یہ دیکھ کر زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا کہ۔۔۔‘ داعش کی قید سے فرار ہونے والی مغربی خاتون نے ایسا انکشاف کردیا کہ ہر کوئی حیران پریشان رہ گیا

  

دمشق(مانیٹرنگ ڈیسک) نومبر 2014ءمیں ایک کینیڈین لڑکی اپنی دو بیٹیوں اور ایک اور ساتھی لڑکی کے ہمراہ کینیڈا سے بھاگ کر شام آئی اور داعش میں شمولیت اختیار کر لی۔ گزشتہ دنوں وہ داعش کے چنگل سے فرار ہوئی اور کرد فورسز کے سامنے سرنڈر کر دیا۔ اس نے دوران تفتیش ایسا انکشاف کیا ہے کہ ہر کوئی سن کر پریشان رہ گیا۔ رپورٹ کے مطابق مونٹریال، کینیڈا کی اس 22سالہ لڑکی نے کرد جنگجوﺅں کو بتایا کہ ”جب میں اور میری ساتھی لڑکی شام پہنچیں تو یہ دیکھ کر ہمیں شدید جھٹکا لگا کہ ہم جو سوچ کر آئی تھیں یہاں صورتحال اس کے بالکل برعکس تھی۔ وہاں ہمہ وقت ہر فرد کی نگرانی کی جاتی تھی اور ہر چیز خطرناک تھی۔“

’میرا خطبہ جمعہ ادھورا رہ گیا تھا، اب میں۔۔۔‘ مصر کی مسجد میں دہشتگردوں کے حملے میں 300 افراد کی شہادت کے بعد شدید زخمی امام مسجد نے ہسپتال سے ایسا اعلان کردیا کہ جان کر آپ کا بھی ایمان تازہ ہوجائے گا

لڑکی کی ماں نے کینیڈین حکام کو بتایا ہے کہ ”شام جانے سے پہلے میری بیٹی نے خاندان یا کسی دوست کو اپنے ارادے کے متعلق نہیں بتایا لیکن شام پہنچ کر اس نے مجھے فون کیا۔ وہ زاروقطار رو رہی تھی اور کہہ رہی تھی کہ اس کی نگرانی ہو رہی ہے اور وہ محفوظ نہیں ہے۔ اس نے مجھ سے اپنے اقدام پر معافی بھی مانگی۔“رپورٹ کے مطابق گزشتہ دنوں لڑکی اپنی دونوں بیٹیوں کے ہمراہ داعش کے زیرقبضہ علاقے سے فرار ہوئی اور کرد جنگجوﺅں کے سامنے سرنڈر کر دیا اور اس وقت وہ ان کی حراست میں ہے۔ کینیڈین حکام اس معاملے سے آگاہ ہیں اور اسے واپس لیجانے کے لیے اس کے سفری کاغذات تیار کروا رہے ہیں۔

مزید :

بین الاقوامی -