’میرے گھر کے دروازے پر بار بار دستک ہوئی، تنگ آکر دروازہ کھولا تو باہر ایک لڑکی برہنہ حالت میں کھڑی تھی جو کہنے لگی۔۔۔‘

’میرے گھر کے دروازے پر بار بار دستک ہوئی، تنگ آکر دروازہ کھولا تو باہر ایک ...
’میرے گھر کے دروازے پر بار بار دستک ہوئی، تنگ آکر دروازہ کھولا تو باہر ایک لڑکی برہنہ حالت میں کھڑی تھی جو کہنے لگی۔۔۔‘

  

دبئی سٹی (مانیٹرنگ ڈیسک) روزگار کی تلاش میں خلیجی ممالک کا رُخ کرنے والوں کو اکثر مشکل حالات سے گزرنا پڑتا ہے۔ بعض اوقات تو ان کی مجبوریوں کا ایسا استحصال کیا جاتا ہے کہ عزت بھی خطرے میں پڑ جاتی ہے۔ کچھ ایسی ہی بدقسمتی ازبکستان سے ملازمت کی تلاش میں متحدہ عرب امارات آنے والی ایک نوجوان لڑکی کے ساتھ پیش آئی، جس کی عزت یوں پامال کی گئی کہ بیچاری اپنے برہنہ جسم کو ڈھانپنے کے لئے لوگوں کے دروازے کھٹکھٹانے پر مجبور ہو گئی۔

گلف نیوز کے مطابق ایک 39 سالہ اماراتی شخص نے ازبک لڑکی کو ایک مقدمے کے سلسلے میں مدد فراہم کی تھی اور اس کی ضمانت کروائی تھی۔ لڑکی کا کہنا ہے کہ وہ اسی معاملے میں کچھ بات چیت کرنے اس کے فلیٹ پر گئی تھی لیکن ملزم نے بزور طاقت نہ صرف اسے زیادتی کا نشانہ بنایا بلکہ اس کی عزت پامال کرنے کے بعد برہنہ حالت میں ہی اپنے فلیٹ سے باہر نکال دیا۔

متاثرہ لڑکی نے پولیس کو بتایا ”میں اس کے فلیٹ پر پہنچی اور اس کے بچوں کے ساتھ مختصر بات چیت کے بعد اندر چلی گئی۔ وہ بالکونی میں بیٹھا شراب نوشی کررہا تھا۔ اس نے اپنے بچوں کو ڈانٹ ڈپٹ کر دوسرے کمرے میں بھیجا اور پھر مجھے بالوں سے پکڑ کر کھینچتا ہوا بیڈروم میں لے گیا۔ وہاں اس نے مجھے برہنہ کردیا اور زیادتی کا نشانہ بنانا شروع کردیا۔ میں نے متعدد بار خود کو اس کی گرفت سے آزاد کروانے کی کوشش کی لیکن وہ ہر بار مجھے نیچے گرا کر میری عزت پامال کرنے لگتا تھا۔ تقریباً دو گھنٹے تک اس نے اپنے مظالم جاری رکھے اور پھر بالوں سے پکڑ کر کھینچتا ہوا فلیٹ سے باہر لے آیا۔ اس نے مجھے باہر نکالنے کے بعد اندر سے دروازے کو لاک کرلیا۔“

دبئی میں خاتون نے اتفاقاً اپنی 13 سالہ بیٹی کا موبائل کھول کر دیکھا تو اندر ایسی چیز نظر آگئی کہ زندگی کا سب سے زوردار جھٹکا لگ گیا، ایسا کیا تھا؟ جان کر تمام والدین کے واقعی ہوش اُڑجائیں

ظلم کا نشانہ بننے والی لڑکی اپنے برہنہ جسم کو چھپانے کی خاطر ساتھ والے فلیٹ کے دروازے پردستک دیتی رہی۔ فلیٹ میں مقیم ایک روسی خاتون کا کہنا تھا کہ انہوں نے بار بار دستک کے بعد جب دروازہ کھولا تو سامنے ایک لڑکی برہنہ حالت میں کھڑی تھی۔ لڑکی کی قابل رحم حالت دیکھ کر وہ اس کی مدد کے لئے آگے بڑھیں اور اسے تن ڈھانپنے کے لئے کپڑے دئیے اور پولیس کو اس معاملے کی اطلاع کی۔

دریں اثناءملزم گرفتاری سے بچنے کے لئے فرار ہوچکا تھا لیکن پولیس نے اس کی تلاش جاری رکھی اور بالآخر النہدا کے علاقے سے اسے گرفتار کرلیاگیا۔ جب اس کے خلاف قانونی کارروائی کا آغاز ہوا تو اس نے الزامات کو ماننے سے انکار کردیا تاہم پولیس نے اس کے خلاف مضبوط شواہد حاصل کرلئے تھے، جن میں سی سی ٹی وی کیمرے کی ریکارڈنگ بھی شامل تھی۔

پولیس کا کہنا ہے کہ سی سی ٹی وی ریکارڈنگ میں لڑکی کو فلیٹ کے دروازے پر آتے اور اندرجاتے دیکھا جاسکتا ہے۔ تقریباً دو گھنٹے بعد اسے برہنہ حالت میں فلیٹ کے باہر دیکھا جاسکتا ہے۔ تمام شواہد اور ثبوتوں کو مدنظر رکھتے ہوئے عدالت نے ملزم کو تین سال قید کی سزا سنادی ہے۔

مزید :

عرب دنیا -