گیس ذخائر میں تیزی سے کمی،7سال بعد یوریا مینوفیکچرنگ میں قلت ہوگی:مراد علی شاہ

گیس ذخائر میں تیزی سے کمی،7سال بعد یوریا مینوفیکچرنگ میں قلت ہوگی:مراد علی ...
گیس ذخائر میں تیزی سے کمی،7سال بعد یوریا مینوفیکچرنگ میں قلت ہوگی:مراد علی شاہ

  



کراچی(ڈیلی  پاکستان آن لائن) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہاہے کہ گیس کے ذخائر ختم ہونے سے27ـ2026 میں یوریا مینوفیکچرنگ میں شدید قلت کا سامنا کرنا ہوگا جس کیلئے تھر کول ایک نہایت ہی سستا حل ہے۔ سندھ گورنمنٹ سی پیک کے تحت صاف کوئلے کی ٹیکنالوجی مثلاً کوئلے سے لیکویڈ (ڈیزل) اور کھاد کیلئے گیس اور کوئلے کیلئے ایک بلاک IV مختص کیاہے۔27ـ2025 تک پاکستان کو2.6ایم ٹی پی اے کھاد کی سالانہ ضرورت ہوگی اور تھرکے بلاک VI میں30سال کیلئے پیداوار کے ذخائر ہیں۔

تفصیلات کے  مطابق چین کےسابق سفیر شازوکانگ ٹی کی قیادت میں چائنیز پبلک اینڈ پرائیویٹ انویسٹرز کے40رکنی وفد سے گفتگو کرتے ہوئے سید مراد علی شاہ کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت کی درخواست پر سی پیک پروجیکٹس کی جوائنٹ کوآرڈی نیشن کمیٹی نے تھرکول فیلڈکے بلاکVI کو پہلے مرحلے میں1320 میگاواٹ کی پیداوار کیلئے شامل کیاہے،سندھ حکومت نے تمام ونڈ پاور پروجیکٹس کو اْسی زمین (جو اْن کے ونڈ پاور پروجیکٹس کیلئے دی گئی ہے) پر ہائی برڈ پروجیکٹس سولرکے ساتھ قائم کرسکتے ہیں اور یہ چائنیز سرمایہ کاری کیلئے ایک اور اچھا موقع ہے۔ وزیراعلیٰ نے تمام متعلقہ محکموں کو ہدایت کی کہ وہ ورکنگ پیپرز تیار کریں اور انہیں چائنیز فرمز کے پاس انکے سربراہ کے ذریعے جمع کرائیں تاکہ منصوبوں کو حتمی شکل دی جاسکے۔

مزید : علاقائی /سندھ /کراچی